حکومت معیشت کے معاملات میں جھوٹ بول رہی ہے: شاہد خاقان عباسی

اسلام آباد (پبلک نیوز) سابق وزید اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ حکومت معیشت کے معاملات میں جھوٹ بول رہی ہے۔ معیشت سے متعلق معاشی امور پر حکومتی ترجمان کی بات مانیں یا دیگر وزراء کی۔ حکومتی ترجمان نے کہا حکمت عملی ناکام ہوچکی کچھ اور سوچنے کی ضرورت ہے۔

 

مسلم لیگ ن کے راہنماء شاہد خاقان عباسی کا میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ حکومت کے اپنے ترجمان نے حکومت کی پالیسی کو چیلنج کیا اور تنقید کی، حکومت کے ترجمان کہہ رہے ہیں خطرے کی گھنٹی بج رہی ہے۔ ہم فرخ سلیم کی بات پر یقین کریں یا وزیر خزانہ اور وزیر اطلاعات کے بیان پر یقین کریں۔ حکومت معیشت کے معاملات میں جھوٹ بول رہی ہے۔ معیشت سے متعلق معاشی امور پر حکومتی ترجمان کی بات مانیں یا دیگر وزراء کی۔

 

 

شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ حکومت نے ڈالر کی قیمت بڑھائی لیکن ایکسپورٹ میں کمی آئی۔ حکومتی ترجمان نے کہا حکمت عملی ناکام ہوچکی کچھ اور سوچنے کی ضرورت ہے۔ فرخ سلیم نے کہا کہ حکومت معاشی مسائل کو حل نہیں کررہی۔ ڈاکٹر فرخ سلیم نے کہا کہ حکومت جھوٹ بول رہی ہے۔ فرخ سلیم نے کہا کہ اضافی قرضے لیے جارہے ہیں۔ اگر خطرے کی گھنٹیاں بج رہی ہیں تو سب کو تشویش ہونی چاہیے۔

 

ان کا کہنا تھا کہ ایسے غیرمعمولی حالات کبھی پاکستان میں پیدا نہیں ہوئے۔ اس حکومت میں اکثر لوگوں کو پتا نہیں ہوتا کہ ان کا کیا کام ہے۔ عمران خان بھی اکثر بھول جاتے ہیں کہ وہ وزیراعظم ہیں۔ ایسا گزشتہ 32 سال میں نہیں دیکھا گیا۔ ٹیکس اس سال کم اکٹھے ہوئے۔ نوبت یہاں تک آئی ہے کہ حکومتی ترجمان خود ہی تنقید کررہا ہے۔ افراط زر میں اتنا  اضافہ 10 سال میں نہیں ہوا جو 6 ماہ میں ہوا۔ سعودی عرب سے 3 ارب، ابوظبی اور دیگر امداد ملا کر 11 ارب ڈالرز بنتے ہیں۔ زرمبادلہ مجموعی طور پر 14 ارب ڈالرز ہیں تو بحران کیا ہے؟ عوام جواب مانگتی ہے، بحران کی وجوہات کیا ہیں؟

حارث افضل  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں