عوام کو پتا چل گیا کہ نیب کس کے اشاروں پر چل رہا ہے: شاہد خاقان عباسی

اسلام آباد(پبلک نیوز) مسلم لیگ ن کے سینئر رہنماء اور سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ ڈی جی نیب نے ٹی وی انٹرویوز کے ذریعہ میڈیا ٹرائل کی کوشش کی ہے۔ ڈی جی نیب نے تحقیقات کی تفصیلات افشاں کیں۔ عوام کو پتا چل گیا کہ نیب کس کے اشاروں پر چل رہا ہے۔

 

سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی مریم اورنگزیب کے ہمراہ پریس کانفرنس، شاہد خاقان عباسی نے قومی احتساب بیورو (نیب) کے ڈائریکٹر جنرل لاہور سلیم شہزاد کے حالیہ انٹرویو پر ردعمل دیا۔ انہوں نے کہا کہ ڈی جی نیب نے ٹی وی انٹرویوز کے ذریعہ میڈیا ٹرائل کی کوشش کی۔ اس انٹرویو کے ذریعہ کیس پر اثر انداز ہونے کی کوشش کی گئی۔ وزیراطلاعات نے ڈی جی نیب کے بیان کی تائید کی۔ ڈی جی نیب نے جو کچھ کہا وہ حکومتی جماعت کا ہی بیانیہ ہے۔ بغیر ثبوت الزامات لگا کر ن لیگ کو سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ میں نیب کو دو کیس دینا چاہتا ہوں، ایک کارکے کا 780 ملین ڈالر اور ریکوڈک 12 ارب ڈالر کا کیس ہے۔ نیب ان کیسز پر اسی معیار پر تحقیقات کرے جس معیار پر ن لیگ کے خلاف کر رہی ہے۔ اس وقت ملک میں صرف ایک جماعت کا احتساب ہو رہا ہے۔ ہم بھی چاہتے ہیں کہ احتساب ہو اور آغاز بھی ن لیگ سے ہو۔

 

ان کا کہنا تھا کہ پھر اسی معیار پر سب کو تولا جائے جس پر ن لیگ اور نواز شریف کو تولا جا رہا ہے۔ جس کیس میں شہباز شریف کو گرفتار کیا گیا اس کی کوئی حقیقت نہیں۔ کیس یہ ہے کہ بلیک لسٹ کمپنی کا ٹھیکہ منسوخ کیا گیا۔ اورینج ٹرین میں بھی اس کمپنی کے ذمہ 90 کروڑ کی ریکوری واجب الادا ہے۔ شہباز شریف کے خلاف کوئی تو ثبوت ہو جس وجہ سے گرفتار کیا گیا۔ ہم احتساب سے نہیں ڈرتے۔ سب سے پہلے میرا احتساب کریں، جس ڈی جی نیب نے انٹرویو دیا ان کے متعلق اطلاع ہے کہ انکی ڈگری جعلی ہے۔

عطاء سبحانی  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں