شریف گروپ آف انڈسٹریز میں سیکڑوں گھوسٹ ملازمین بھرتی کیے جانے کا انکشاف

لاہور(شاکر محمود اعوان) شریف فیملی منی لاندڑنگ تحقیقات میں تیزی آ گئی۔ شریف گروپ آف انڈسٹریز میں سیکڑوں گھوسٹ ملازمین بھرتی کیے جانے کا انکشاف سامنے آگیا۔ نیب ذرائع کے مطابق ملازمین تنخواہیں وصول جبکہ حمزہ اورسلمان شہباز گھوسٹ ملازمین کے ذریعے منی لانڈرنگ کرتے رہے۔

 

 تفصیلات کے مطابق نیب نےشریف گروپ آف انڈسٹریز کا رکارڈ قبضے میں لے لیا۔ نیب ذرائع کے مطابق شریف گروپ آف انڈسٹریز کی متعدد کمپنیوں میں گھوسٹ ملازمین بھرتی کیے گئے۔ حمزہ اور سلمان شہباز کی بے نامی کمپنیوں میں گھوسٹ ملازمین کی تعداد زیادہ ہے۔ میسرز یونی ٹاس، گڈ نیچر، یونی ٹیل، وقار ٹریڈنگ، مقصود اینڈ کمپنی، مدنی ٹریڈنگ اور مدینہ کنسٹرکشن میں گھوسٹ ملازمین کی بھرتی کی گئی۔


نیب ذرائع کے مطابق حمزہ اور سلمان نے ایف بی آر سمیت دیگر اداروں میں کمپنیوں سے متعلق کوائف غلط جمع کرائے۔ گھوسٹ ملازمین کے ذریعے منی لانڈرنگ، آمدن کم اور خرچے زیادہ دیکھائے گئے تاکہ ٹیکس سے بچا جا سکے۔

عطاء سبحانی  4 ماه پہلے

متعلقہ خبریں