پبلک اکاؤنٹ کمیٹی سے استعفیٰ ذاتی وجوہات کی بنا پر دیا: شرجیل انعام میمن

کراچی(پبلک نیوز) شرجیل انعام میمن نے پبلک اکاؤنٹ کمیٹی سے استعفیٰ کو ذاتی وجوہات قرار دے دیا، ان کا کہنا ہے کہ میں جیل میں ہوں، تمام ریکارڈ جیل میں نہیں لایا جاسکتا۔ نیب نے 18 ماہ سے مجھے غیر قانونی جیل میں رکھا ہوا ہے۔

 

سندھ ہائیکورٹ میں پیپلزپارٹی کے سابق صوبائی وزیر شرجیل انعام میمن کا نام ای سی ایل میں شامل کرنے کے خلاف درخواست کی سماعت ہوئی، شرجیل میمن کی مشاورت سے درخواست میں ترمیم کرکے دوبارہ دائر کرنا چاہتے ہیں، فیض ایچ شاہ ایڈووکیٹ نے مؤقف پیش کر دیا۔ نیب پراسیکیوٹر بولے شرجیل میمن جیل میں ہے۔ کرپشن کے سنگین الزامات کا سامنا کر رہے ہیں۔

 

شرجیل انعام میمن نے کہا کہ پبلک اکاؤنٹ کمیٹی سے استعفیٰ ذاتی وجوہات کی بنا پر دیا۔ پبلک اکاونٹ کمیٹی کے بہت سارے معاملات ہیں، میں جیل میں ہوں، تمام ریکارڈ جیل میں نہیں لایا جاسکتا۔ شرجیل میمن نے نیب کو آڑے ہاتھوں لیت ہوئے کہا۔ نیب نے 18 ماہ سے مجھے غیر قانونی جیل میں رکھا ہوا ہے۔ نیب کے تمام مقدمات جعلی ہیں، جو کہ سیاسی مخالفین کے خلاف بنائے گئے ہیں۔ عدالت نے شرجیل میمن کے وکیل کی جانب سے درخواست واپس لینے پر سماعت نمٹا دی۔

عطاء سبحانی  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں