وفاقی وزير ريلوے شيخ رشيد نے ٹرینیں لیٹ ہونے پر قوم سے معافی مانگ لی

اسلام آباد(پبلک نیوز) سپریم کورٹ نے ریلوے گالف اینڈ کنٹری کلب اراضی معاملے پرعدالت نے نیب کو ریفرنس کی کاپی جمع کرانے کا حکم ديے دیا۔ دلائل کی اجازت ملنے پر شيخ رشيد بولے لاہور کا قبضہ گروپ ہر چيز خريد ليتا ہے۔

 

جسٹس شیخ عظمت سعید کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے گالف اینڈ کنٹری کلب اراضی معاملے پر سماعت کی۔ عدالت نے وزیرریلوے شیخ رشید کو دلائل دینےکی اجازت دی۔ شیخ رشید بولے کیس 9 سال سے زیر التواء ہے۔ وکیل کو 45 لاکھ روپے ديے ایک کروڑ مانگ رہا ہے۔

 

لاہور کا قبضہ گروپ ہر چیز خرید لیتا ہے جسٹس شیخ عظمت سعید کو ملک کا سرتاج قرار دے دیا۔جسٹس شیخ عظمت سعید نے ریمارکس دیئے شیخ صاحب! تیاری کر کے آئیں۔ کیس کو منطقی انجام تک پہنچاتے ہیں۔ پراسیکیوٹر نیب نے بتایا ریفرنس ميں فرد جرم عائد ہونی ہے۔ عدالت نے ریفرنس کی کاپی طلب کر لی۔ سماعت آئندہ جمعرات تک ملتوی کر دی۔

 

وزير ريلوے شيخ رشيد نے عدالت سے باہر ميڈيا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ٹرينوں کی تاخير پر معافی مانگ لی، مزيد سولہ ٹرينيں چلانے کا بھی اعلان کيا۔ ٹرینيں لیٹ ہونے پرقوم سے معافی مانگتا ہوں۔ لوگ خبریں لگوا رہے ہیں۔ رائل پام کنٹری کلب میں برصغیر کا سب سے بڑا فراڈ ہوا۔ مخالفین سن لیں، ہم 16 ٹرینیں اور چلائیں گے۔ دس مزید فریٹ ٹرینیں بھی چلائیں گے۔

 

شیخ رشید نے جہانگیرترین اور شاہ محمود قریشی کے مسئلے کو گھر کا معاملہ قرار دے دیا۔ انہوں نے کہا کہ جہانگیر ترین اور شاہ محمود قریشی کامسئلہ تحریک انصاف کے گھر کا معاملہ ہے۔ گھر کی بات گھر میں رہنے دی جائے تو بہتر ہے۔ وزیرریلویز کا کہنا تھا وزیراعظم عمران خان نے پی ایس او کا کام ریلوے کو دلوا دیا ہے جس پروہ ان کے شکر گزار ہیں۔

عطاء سبحانی  4 ماه پہلے

متعلقہ خبریں