شیخ رشید کا وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ سے مستعفی ہونے کا مطالبہ

لاہور(پبلک نیوز) وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ آج بڑا دن ہے ساری قوم اور ریلوے چیف جسٹس کے مشکور ہیں۔ 28 سال بعد ریلوے دوبارہ زندہ ہوئی ہے۔ اسلام آباد میں چار تاریخ کو فیصلہ ہو گا، دو ارب روپیہ ہم نے بزنس ٹرین سے لینا ہے۔

 

لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید نے کہا کہ 1490 کیسز ہیں ایک سو تئیس بڑے کیسز ہیں ان سب کو ساٹھ دنوں میں فیصلہ کیا جائے کا حکم صادر فرمایا ہے۔ 28 سال بعد ریلوے دوبارہ زندہ ہوئی ہے۔ پی ٹی آئی سے چندہ اکٹھا کرنا سیکھا ہے، آصف سعید کھوسہ عظیم انسان ہیں۔ مراد علی شاہ میں اگر تھوڑی سی بھی شرم ہے تو فوری مستعفی ہو جانا چائے۔ ہر شخص کی انکوائری ہونی چاہئے، ہمارے لوگوں کو ڈبل سزا ہونی چاہیے۔

 

شیخ رشید کا کہنا تھا کہ بلاؤل کی تقریر پر پریشان ہوں، میرا خیال تھا کہ وہ باپ کے پیچھے نہیں چلے گا۔ آصف زرداری کے سارے کرمنل سے رابطے ہیں، اس کا دوسرا گھر جیل ہے۔ زرداری نے میرے بلاؤل کو درست استعمال نہیں کیا۔ عمران خان کو جو اقتدار ملا ہے۔

 

انھوں نے مزید کہا کہ لاہور میں شریف خاندان کا چالیس سال سے راج ہے۔ انہوں نے ہی سپریم کورٹ پر حملہ کیا تھا۔ نواز شریف نے میرے ورکروں کو استعمال کیا۔ سارے گندے اکٹھے مارچ سے پہلے پکڑے جائے گے۔

وفاقی وزیر آبی وسائل فیصل واڈا نے کہا کہ شیخ رشید صاحب کی بات بلکل ٹھیک ہے، شہباز شریف بلا نہیں باگڑ بلا ہے۔ نواز شریف قیدی کا نمبر 4420 رکھ دینا چاہیے۔ نواز شریف مودی کا یار تھا، یہ ان کے سامنے لیٹے ہوئے تھے۔ ہمیں جلد بازی میں کوئی کام نہیں کرنا چاہتے ہیں۔

 

انہوں نے مزید کہا کہ گورنر راج کی کراچی میں کوئی چیز نہیں ہے، فارورڈ بلاک بن رہا ہے۔ کراچی سانحہ بلدیہ ٹاون کے ڈھائی سو لوگوں کو جلایا گیا میں ان کے خلاف نکلو گا۔ الطاف حسین کرمنل ہیں ان کے بچے ہوئے کچھ انڈے ہیں۔ علی رضا عابدی کے قتل پر بڑا دکھ ہوا ہے۔ ان کے قاتلوں سے بہت قریب پہنچ گئے ہیں۔ بہت جلد ان کو سرعام سزا دی جائے گی۔

عطاء سبحانی  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں