عمران خان اور چودھری نثار ایک دوسرے سے خوش نہیں: شیخ رشید

اسلام آباد (پبلک نیوز) وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید نے کہا ہے کہ اٹھارہ سو کلومیٹر پٹری اور ڈبل ٹریک پشاور سے کراچی تک ہو گی۔ ایم ایل ٹو میں بھی یہی ہو گا، 800 اپ گریڈیشن ریل ٹریک کی ہو گی۔ 12 نومبر کو گورو بابا نانک کے نام پر ایک اسٹیشن بنا رہے ہیں جو سکھ برادری کے لیے ہو گا۔ کرتار پور بارڈر پر جو عمران خان اور چیف آف آرمی سٹاف نے سٹینڈ لیا تاریخی ہے۔

 

تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ اللہ تعالیٰ کا شکر ہے 6 فروری کا جو معاہدہ کیا تھا ایم ایل ون کا دستخط کرنے جا رہا ہوں۔ اٹھارہ سو کلومیٹر پٹری اور ڈبل ٹریک پشاور سے کراچی تک ہو گی۔ ایم ایل ٹو میں بھی یہی ہو گا، 800 اپ گریڈیشن ریل ٹریک کی ہو گی۔ 12 نومبر کو گورو بابا نانک کے نام پر ایک اسٹیشن بنا رہے ہیں جو سکھ برادری کے لیے ہو گا۔ کرتار پور بارڈر پر جو عمران خان اور چیف آف آرمی سٹاف نے سٹینڈ لیا تاریخی ہے۔

 

شیخ رشید کا کہنا تھا کہ اسد عمر اس ملک کا قیمتی سرمایہ ہیں وہ ملک کا اثاثہ ہے۔ میں نے اسد عمر کے ساتھ کام کیا ہے، ایماندار بھی ہے۔ امید ہے وہ کابینہ میں واپس آئے گا۔ لوگوں نے صرف انجن خریدے ہیں کمیشن کھانے کے لیے۔ رحمان بابا کے علاوہ ایک اور ٹرین چلانے جارہے ہیں۔ جس نے میرٹ کی خلاف ورزی کی ان کو نہیں چھوڑوں گا۔ ایم ایل ون اور نالہ لئی کا کام مکمل ہوا اس دن زندگی کا مقصد پورا ہوجائے گا۔ گائے بھینس بکری والے کام ہوتے رہتے ہیں۔ کوہالہ کا پراجیکٹ ایک بڑا منصوبہ ہے۔

 

وزیر ریلوے  کا کہنا تھا کہ شہباز شریف لندن میں گھوم  رہے تھے یہاں ان کے کمر میں درد تھا۔ دور سے دیکھوں تو بلاول پرویز نظر آتا ہے، قریب سے دیکھوں تو پروین نظر آتی ہے۔ صاحب یا صاحبہ کہنے سے کیا فرق پڑتا ہے۔ اگر کوئی فنی خرابی نہیں تو اس سے کیا مسئلہ ہے۔ پاکستان میں اچھے لوگوں کی کمی ہے۔

 

ان کا کہنا تھا کہ وزیر بن جانا کوئی بڑی بات نہیں۔ ٹیلنٹڈ آدمی کا وزرات چھوڑ جانا اچھی بات نہیں۔ گیس بجلی پانی کی قیمتیں اور بیروزگار بڑھی ہے۔ موج میلہ کرکے چلے جاتے پیچھے لوگوں کو مسئلہ بن جاتا ہے۔ شہباز پھونڈی کر رہے ہیں یہ سب ہمدردیاں دکھارہے ہیں۔ گدھے کو رنگ کرنے سے وہ زیبرا نہیں بن جاتا۔ میں خود کو وزیر اطلاعات کے قابل نہیں سمجھتا۔ اس وزارت پر فردوس عاشق اعوان بہتر کام کرتی ہیں۔

 

انہوں نے کہا کہ فالودے والا اندر ہے جیل کے اور اربوں کھانے والے باہر بیٹھا ہے۔ عمران خان اور چوہدری نثار ایک دوسرے سے خوش نہیں ہیں۔ شہباز شریف جیسے لوگ بلاول بارے عمران خان کے بیان کو ہوا دے رہے ہیں۔ شہبازشریف لندن میں ہوا کھا رہے ہیں اور کہہ رہے ہیں کمر میں درد ہے، پٹھہ کھچ گیا ہے۔ جو لیڈر جیل نہیں جا سکتا وہ لیڈر نہیں گیدڑ ہے۔ چوہدری نثار میری اطلاع کے مطابق حلف نہیں اٹھا رہا۔ یہ ایوان چوروں سے بھرا ہوا ہے۔ اسد عمر سے رابطے میں ہوں، کوشش ہے کابینہ میں واپسی ہو۔ اسد عمر تحریک انصاف کا سرمایہ ہیں۔

حارث افضل  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں