شہباز شریف کو چیئرمین پی اے سی بنانا عمران خان کی سب سے بڑی غلطی ہے: شیخ رشید

لاہور (پبلک نیوز) وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ شہباز شریف کو چیئرمین پبلک اکاؤنٹ کمیٹی بنایا گیا ہے۔ چور کو دودھ کی رکھوالی کہ لیے مقرر کیا گیا ہے۔ عمران خان کا اتحادی ہوں۔ مگر اس فیصلہ کے خلاف کورٹ میں جاؤں گا۔ اسپیکر کو ریکویسٹ کروں گا کہ مجھے احتساب کمیٹی کا چیئرمین بنایا جائے۔
پریس کانفرنس کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ اسحاق ڈار جعلی کام کرنے کا ماہر ہے۔ نیب چیئرمین سے درخواست کرتا ہوں کہ چوروں کا احتساب کریں۔ چیف جسٹس صاحب کو خط لکھوں گا اور اس معاملہ پر نوٹس لینے کی درخواست کروں گا۔

انھوں نے کہا کہ اگر وزیر اعلیٰ چاہیں تو کے سی آر کہ معاملے پر جانے اور ملنے کہ لیے تیار ہوں۔ آصف زرداری کا کیس شہباز شریف سے بھی خطرناک ہے۔ آصف زرداری بھی جلد جیل جائے گا۔ مراد علی شاہ نے ابھی تک کے سی آر پر سائن نہیں کی۔ شہباز شریف اور نواز شریف کہ روڈ پر آنے سے کوئی فرق نہیں ہوگا۔

شیخ رشید نے بتایا کہ میں عقلمندوں کا لیڈر ہوں۔ زرداری اور شہباز اور نواز کی طرح نہیں۔ صفائی اور خوش اخلاقی سے ریلوے ٹرین چلانی ہے۔ بیس ٹرین چلا چکے ہیں۔ مزید  چھ ٹرین کا اضافہ کیا جا رہا ہے۔ دو بزنس ٹرین کا جلد افتتاح کروں گا۔ تمام جلد پوری پاکستان میں ٹرین پر سفر کروں گا۔

ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان نے محنت کرکے ملک کو دیوالیہ ہونےسے بچایا۔ مشکل وقت میں دوست ممالک نے ہمارا ساتھ دیا۔ آئی ایم ایف شرائط کم کرنے میں عمران خان نے کردار ادا کیا۔ چیئرمین نیب سے گزارش ہے کرپشن کیسز جلد نمٹائیں۔ شہباز شریف کے خلاف سپریم کورٹ میں جاؤں گا۔

وفاقی وزیر واضح کیا کہ چوروں کے آئی جی جیل سے بھی اسمبلی آ سکتے ہیں۔ عام عادمی سالوں جیل میں پڑا رہتا ہے۔ سانحہ ساہیوال کے مجرموں کو عمران خان نہیں چھوڑے گا۔ نوازشریف، مریم نواز پہلے بھی سڑکوں پر آئے تھے۔ روڈز اب ایسے چوروں کے لیے تنگ پڑگئے ہیں۔

صحافیوں کے سوالوں کا جواب دیتے ہوئے انھوں نے بتایا کہ جیل میں تھا تو ساڑھے 3سال پروڈکشن آرڈر نہیں ملے۔ ریلوے پولیس کی تنخواہیں پنجاب پولیس کے برابر کر رہے ہیں۔ سرکلر ٹرین اب نہیں بنی تو قیامت تک نہیں بنے گی۔ سیاحت کے  فروغ کے لیے ریلوے اہم کردار ادا کرے گا۔ عمران خان کی اہلیت دیکھ کر پڑوسی ملکوں نے قرضے دیئے۔

اپنی گفتگو میں ان کا بتانا تھا کہ مردوں کے نام پر گاڑیاں امپورٹ کی گئیں۔ شہباز شریف کو پی اے سی  چیئرمین بنانا سب سے بڑی غلطی ہے۔ کیا فیصلہ ہوگا پتہ نہیں،سپریم کورٹ جا رہا ہوں۔ چور مچائے شور کی فلم لگی ہوئی ہے۔ دودھ کی رکھوالی پر بلے کو بیٹھا دیا گیا۔

انھوں نے مزید کہا کہ عمران خان کے پاس این آر او کی کوئی گنجائش نہیں۔ غلط مشورے دینے والے ساری عمر پچھتائیں گے۔ ہاتھی کے دانت دکھانے کے اور، کھانے کے اور ہیں۔ سزاؤں سے بچنے کے لیے سب کچھ کیا جا رہا ہے۔ اسحاق ڈار جعلی کاغذ بنانے میں ماہر ہیں۔ اسحاق ڈار نے آئی ایم ایف کو جعلی کاغذ دیئے۔ چیئر مین نیب سے درخواست ہے ریلوے کے مقدمات نمٹائے جائیں۔

احمد علی کیف  6 ماه پہلے

متعلقہ خبریں