اپوزیشن 'بارگیننگ' کیلئے فوجی عدالتوں کی مخالفت کر رہی ہے: شیخ رشید

لاہور (پبلک نیوز) وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ اللہ عمران خان کے ساتھ ہے۔ کوئی آپشن نہیں عمران کے علاوہ ایم ایل ون انقلاب ہو گا۔ معیشت کے لیے ڈونلڈ ٹرمپ پاکستان کا دورہ بھی کر سکتے ہیں۔ امریکہ کو سمجھ آ گئی ہے۔

ریلویز ہیڈ کوارٹرز میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کے متعلق سعودی عرب، یو اے ای اور چین کے ساتھ بات چیت کررہے ہیں آئی ایم ایف سے انکی شرائط پر بات نہیں کریں گے۔ جو لوٹ مار زرداری اور شریفوں نے نقصان پہنچایا ویسا معاہدہ کریں گے۔

انھوں نے کہا کہ ق لیگ والے کہیں نہیں جاتے وہ ہمارے ساتھ ہیں۔ سو دنوں میں چوروں اور کرپٹ لوگوں نے لوٹ مار کی تو عمران خان جرات سے سنبھال رہاہے۔ زرداری کا کھاتہ کھلا ہے وہ رات کس طرح سوتا ہوا نہیں معلوم دولت سب چیز نہیں ہوتی اپنے بلاول کی فکر اس کے ساتھ کیا ہوگا۔

ان کا کہنا تھا کہ بلاول کو پیغام بھیجا بھٹو بن زرداری نہ بن۔ دونوں خاندانوں کا سیاسی مستقبل نہیں ہے۔ شہبازشریف کو این آر اونہیں ملے گا۔ بلاول کی ماں کا سیاسی فائدہ زرداری نے اٹھایا۔ ملک کے ساتھ کیا کیا زرداری نے۔ پبلج اکائونٹس کمیٹی کےلئے لیٹر لکھاہے سوموار کو سپریم کورٹ کا فیصلہ آتاہےخود پبلک اکائونٹس کمیٹی کا چئیرمین بنوگا کوئی مجھے نہیں روک سکتا۔

شیخ رشید نے کہا کہ حلفاً کہتا ہوں جھوٹ نہیں بولوں گا این آر او کسی کو مانگتے نہیں دیکھا صرف شہباز شریف مانگ رہا ہے۔ پبلک اکاؤنٹس کا پاسپورڈ معلوم ہے، اس دم پر پاؤں رکھنے کے لیے آ رہا ہوں۔ سب سے سئنیر وزیر و سیاستدان ہوں۔ پی اے سی میں جانا لازمی ہے میرا حق ہے۔ سپیکر کو فیصلہ کرنا ہے۔ رکن ہوتے ہیں پی ٹی آئی کس کانام نکالتی ہے اس کا کام ہے۔

وزیر ویلوے نے بتایا کہ سیاست میں کوئی افسر نہیں ہوتا۔ ن لیگ کے کیسز شیخ رشید ہیڈ کرے گا۔ اگر سپریم کورٹ سے ہار گیا تو مان لوں گا لیکن ن لیگ کا احتساب میں کروں گا۔ اپنے سے بڑے خواب نہیں دیکھتا۔ عمران خان کے ساتھ قوم ہے۔ کرپشن کے خلاف ووٹ ملے۔

اس ملک میں کرپٹ لوگوں کی کوئی گنجائش نہیں۔ اگر ایسا ہوا تو ن لیگ فوجی عدالتوں کے حق میں ووٹ دے گی۔ ن لیگ ابھی پھڑ پھڑا کر وزن قائم کرناچاہتی ہے۔ اگر روک سکو تو روک لو پی اے سی میں آ رہا ہوں۔ نمبر ون سے دوستی رہے گی نمبر ون عمران خان ہے۔ ایم ایل ون اور نالہ لئی ہسپتال ہو جائے تو قوم کا شکر ادا کروں گا۔

اپوزیشن بارگیننگ کے لیے فوجی عدالتوں کی مخالفت کر رہی ہے۔ پاک ہماری فوج ہے۔ اگر اسمبلی چلانے کے لیے پی اے سی چیئرمین کے لیے عمران خان نے بات کی تو غلط بات نہیں کی۔ ہاتھی کے دانت کھانے اور دکھانے کے کچھ اور ہیں۔

احمد علی کیف  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں