منی لانڈرنگ کیس میں شہباز شریف فیملی کے خلاف نئے انکشافات

لاہور(شاکر محمود اعوان) شہباز شریف فیملی کے خلاف منی لانڈرنگ کیس میں نئے انکشاف پبلک ہو گئے۔ نیب نے حمزہ، سلمان شہباز، نصرت شہباز اور رابعہ عمران کوغیر ملکی ترسیلات موصول ہونے کا کھوج لگا لیا۔

 

شہباز شریف فیملی منی لانڈرنگ ہو شربا انکشافات کا سلسلہ جاری ہے۔ پبلک نیوز کو موصول دستاویزات کے طابق نیب لاہور نے حمزہ شہباز، نصرت شہباز، سلمان شہباز اور رابعہ عمران سے متعلق مزید دستاویزی ثبوت حاصل کر لیے ہیں۔ نیب دستاویزات میں کہا گیا ہے کہ شریف فیملی نے غیر ملکی ترسیلات موصول کرنے کے لیے فارم آر پر دستخط کیے۔ نیب کا کہنا ہے کہ فارم آر پر شریف فیملی کیجانب سے لکھا گیا ہے کہ رقم بزنس کے حصول کے لیے منگوائی گئی تھی۔ نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ کو غیر ملکی کرنسی کی ٹرانزیکشن پر مشتمل 10 سے زائد فارم آر موصول ہو چکے ہیں، فارم آر پر شریف فیملی نے نیب کی زیر حراست آفتاب محممود سے تعلقات سے اقرار بھی کیا ہے۔

 

نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ آفتاب محممود نے شریف فیملی کے ارکین کو 6 غیر ملکی کمپنیز سے لاکھوں ڈالر نصرت شہباز، حمزہ شہباز، سلمان شہباز اور رابعہ عمران کو منتقل کیے۔ نیب ذرائع کے مطابق شہباز شریف فیملی کو 2005ء سے 2008ء تک 100 سے زائد ٹرانزیکشن کے ذریعے 5 ممالک سے غیر ملکی ترسیلات بھیجی گئیں۔ نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ سوفٹ میسجز سے رقوم منتقل ہونے کے شواہد حاصل کیے ہیں اور سوفٹ میسجز کے ذریعے بھیجی گئی معلومات حاصل کرنے کے لیے آئی ٹی ماہرین کی خدمات حاصل کیں۔

عطاء سبحانی  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں