سندھ سرکار اپوزیشن سے ہاتھ کر گئی، سندھ اسمبلی میں پولیس اصلاحات کی منظوری

کراچی(منیرساقی) پولیس اصلاحات کی منظوری دے دی گئی۔ اپوزیشن جماعتوں نے قوانین کے نئے مسودے کو مسترد کر کے عدالت جانے کا اعلان کر دیا، سلیکشن کمیٹی کے اجلاس میں بغل بچہ کے نعرے بھی گونجتے رہے۔

 

سندھ سرکار پھر اپوزیشن سے ہاتھ کر گئی، سندھ اسمبلی نے پولیس اصلاحات کی منظوری، سات دن سے جاری سلیکٹ کمیٹی اجلاس کے اختتام کے فوری بعد مشیر اطلاعات سندھ نے ٹیوٹ کر کے اپوزیشن اراکین کو آگ بگولہ کر ڈالا۔ مرتضیٰ وہاب نے دعویٰ کیا کہ پی ٹی آئی ایم کیو ایم اور جی ڈی اے اراکین کی نوے فیصد تجاویز پر اتفاق رائے سے مسودہ منظور کیا گیا۔

 

بوکھلائی پی ٹی آئی ایم کیو ایم اور جی ڈی اے رہنماء تین مرتبہ میڈیا ٹاک کرنے آئے اور کہا کہ وہ تو سلیکٹ کمیٹی کے مسودے کو نہیں مانتے اور فیصلے کیخلاف عدالت جائیں گے۔ شدید تحفظات کے باوجود اپوزیشن جماعتوں نے سلیکٹ کمیٹی کے اجلاس میں شرکت کی، جہاں خوب طنز کے نشتر چلے اور حسب روایت اپوزیشن نے واک آوٹ میں ہی عافیت جانی مجلس عمل کے رہنماء کہتے ہیں اپوزیشن کے لب ولہجے پر افسوس ہوا۔ پیپلز پارٹی کے وزراء نے بھی اپوزیشن کے کردارکی مذمت کی۔

 

صوبائی وزراء کا کہنا تھا کہ سلیکٹ کمیٹی نے پولیس قوانین پر کام کر دیا ہے۔ اپوزیشن بلاوجہ شور مچا رہی ہے۔ مرتضی وہاب کا کہنا تھا کہ قانون سے حکومت اور پولیس پر چیک اینڈ بیلینس ہو گا۔ پولیس اور حکومت صوبائی اور ضلعی پبلک سیفٹی کمیشن کے سامنے جوابدہ ہونگے۔

عطاء سبحانی  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں