گلوکارہ میشا شفیع نے اپنے ذاتی مفادات کے لیے الزام لگایا: علی ظفر

لاہور(پبلک نیوز) گلوکارہ میشا شفیع کے جنسی حراسگی کے الزام پر گلوکار و اداکار علی ظفر کا عزت ہتک کے دعوے کے لیے عدالت پیش ہوئے، جج نے اس موقع پر گواہوں کے بیان ریکارڈ کیے، علی ظفر نے میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ جس کو بلایا جا رہا ہے، وہ عدالت پیش نہیں ہو رہا اور جس کو نہیں بلایا گیا، وہ خود عدالت آ گیا ہے۔

 

سیشن کورٹ لاہور میںی ایڈیشنل سیشن جج شکیل احمد کی سربراہی میں گلوکارہ میشا شفیع اور گلوکار و اداکار علی ظفر سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی، گلوکار علی ظفر کا گلوکارہ میشا شفیع کیخلاف ہتک عزت کے دعوے کے لیے سماعت کے لیے سول کورٹ میں پیش ہوئے، اس موقع پر ان کی اہلیہ بھی ان کے ساتھ تھیں، گلوکار علی ظفر نے دعویٰ کیا کہ میشا شفیع نے اپنے ذاتی مفادات کے لیے الزام لگایا، وہ جھوٹے الزام کی بنیاد پر غیر ملکی شہریت لینا چاہتی ہیں۔

ایڈیشنل سیشن جج شکیل احمد نے میشا شفیع کیخلاف ہتک عزت کے دعویٰ میں گلوکار علی ظفر کے گواہوں کے بیان ریکارڈ کئے۔ گلوکار علی ظفر کا کہنا تھا کہ جس کو بلایا جا رہا ہے، وہ عدالت نہیں آرہی اور جس کو نہیں بلایا جا رہا، وہ خود عدالت آ رہا ہے۔ عدالت نے گواہوں کے بیانات ریکارڈ کرتے ہوئے سماعت 4 مئی تک ملتوی کر دی۔

عطاء سبحانی  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں