الیکشن ٹربیونل کا فیصلہ معطل، قاسم سوری کی اپیل سماعت کیلئے منظور

اسلام آباد(پبلک نیوز) سابق ڈپٹی سپیکر قاسم سوری عہدے پر بحال، سپریم کورٹ نے الیکشن ٹربیونل کا فیصلہ معطل کر کے حکم امتناع جاری کر دیا۔ جسٹس عمر عطاء بندیال نے ریمارکس دئیے کہ الیکشن کمیشن کے نتائج کا فرق درست نہیں، اپیل سماعت کے لئے منظور کر لی۔


جسٹس عمر عطاء بندیال کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے اپیل پر سماعت کی ۔ قاسم سوری کے وکیل نعیم بخاری نے بتایا کہ ستائیس ستمبر کو الیکشن ٹربیونل نے فیصلہ دیا۔ میرے موکل نے 25 ہزار 973 ووٹ لئے۔ مخالف امیدوار لشکررئیسانی نے بیس ہزار چوراسی ووٹ حاصل کئے تھے۔ قاسم سوری نے لشکررئیسانی سے پچپن سو پچاسی سے زیادہ ووٹ لئے۔ نادرا رپورٹ کے مطابق غلط شناختی کارڈ 1533 نامکمل شناختی کارڈ359، ڈوپلیکیٹ شناختی کارڈ 123 بغیر انگھوٹھوں کے نشان کے کاؤنٹر فائل 183، حلقے میں 100 غیر رجسٹرڈ ووٹ کاسٹ ہوئے، ان تمام ووٹوں کو جمع کریں تو یہ تین ہزار ایک سو اٹھانوے ووٹس بنتے ہیں۔

 

جسٹس عمر عطاء بندیال نے ریمارکس دئیے کہ الیکشن کمیشن کے نتائج کا فرق درست نہیں، پچیس ہزار973 میں سے 20 ہزار 84 ووٹ نکال کر دیکھ لیں، فرق یہ نہیں ہے۔ الیکشن کمیشن کہتا ہے کہ درست سیاہی استعمال نہیں ہوئی۔ جسٹس اعجاز الحسن نے ریمارکس دئیے کہ الیکشن ٹریبونل میں ایک الزام دھاندلی کا بھی تھا۔ 19 گواہوں نے الیکشن ٹربیونل کو بتایا ہے کہ ووٹوں کی گنتی کے وقت انہیں باہر نکال دیا گیا تھا۔ 49 ہزار 40 فنگر پرنٹس درست اور 52 ہزار فنگر پرنٹس کی کوالٹی درست نہیں تھی۔ عدالت نے ابتدائی دلائل کے بعد قاسم سوری کی اپیل سماعت کیلئے منظور کر لی۔ سریم کورٹ نے کیس کی سماعت غیر معینہ مدت تک کیلئے ملتوی کر دی۔

عطاء سبحانی  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں