تنخواہیں  نہ ملنے اور ریگولر نہ کرنے پر اساتذہ کا احتجاج

مٹھی (پبلک نیوز) نہ تنخواہ دی جا رہی ہے اور نہ ہی ریگولر کی جارہا ہے۔ تھرپاکر میں وفاقی ادارے نیشنل کمیشن فار ہیومن ڈویلپمنٹ کے اساتذہ 8 ماہ سے تنخواہیں نہ ملنے اور ریگولر نہ کرنے پر احتجاج۔

 

تفصیلات کے مطابق مٹھی میں میڈیا سینٹر کے سامنے این سی ایچھ ڈی ملازمین کا 8 ماہ سے تنخواہیں نہ ملنے اور ریگیولر نہ کرنے کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔ ملازمیں کا کہنا تھا کہ ہم 8 سال سے اس ادارے میں کانٹریکٹ پہ کام کر رہے ہیں لیکن ہمیں ریگیولر نہیں کیا جا رہا ہے اور نہ ہی 8 ماہ سے تنخواہ دی جا رہی ہے۔ یہ وفاقی ادارا ہے اور جس کا منسٹر تعلیم شفقت محمود ہے جب ہم نے ڈی چوک پہ دھرنا دیا تھا تو وعدہ کیا تھا کہ جلد ہی آپ کی تنخواہ دی جائی گی اور ریگیولر بھی کیا جائے گا۔ لیکن ابھی نہ ریگیولر کیا گیا ہے نہ تنخواہ دی جا رہی ہے اس کی وجہ سے ہم فاکا کشی کی زندگی گزر رہی ہے۔

 

وفاقی حکومت اب تعلیم کو صوبائی معاملہ کہہ کر ہم کو سندھ حکومت کے حوالے کرنے کی کوشش کر رہی ہے لیکن سندھ حکومت ہمیں لینے سے انکار کر رہی ہے اس کی وجہ سے ہمارا مستقبل خطرے میں لگ رہا ہے۔ وفاقی حکومت نے ایک کروڑ نوکریوں کا اعلان تو کیا ہے لیکن ہم 2 سو لوگوں کو ہی مستقل کرنے سے قطرا رہی ہے اور ہم کو صرف ایک ماہ کے 8 ہزار دیئے جاتے ہیں جس سے گھر کے خرچے بھی نہیں پورے کر سکتے۔ ہماری وزیراعظم پاکستان عمران خان، وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود سے مطالبہ ہے کہ ہمارے مطالبات پورے کیئے جائیں۔

حارث افضل  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں