پروہی گوٹھ میں مبینہ پولیس مقابلہ، 3 دہشت گرد مارے گئے

کراچی(تنویر منیر) شہر قائد میں دہشت گردی کا منصوبہ ناکام، نادرن بائی پاس اللہ بخش بروہی گوٹھ میں مبینہ پولیس مقابلے میں تین دہشت گرد مارے گئے، دہشت گردوں کے ٹھکانے سے دس کلووزنی خودکش جیکٹ، دستی بم اور اسلحہ برآمد کر لیا گیا۔ ہلاک دہشت گردوں میں سے 2 کی شناخت بھی ہو گئی۔

 

شہر قائد میں بڑی تباہی کا منصوبہ ناکام بنا دیا گیا، نادرن بائی پاس اللہ بخش گوٹھ میں مکان میں چھپے تین دہشت گرد پولیس مقابلے میں انجام کو پہنچے۔ حساس ادارے کی اطلاع پر پولیس نے چھاپہ مارا تو دہشت گردوں نے فائرنگ شروع کر دی۔ ایک گھنٹے تک جاری رہنے والے مقابلے میں تینوں دہشت گرد مارے گئے۔ ہلاک ہونے والے دہشت گردوں میں خطرناک ترین دہشت گرد طلعت محمود عرف یوسف القاعدہ کراچی سیٹ اپ کا امیر تھا۔ تعلق القاعدہ عبدالرزاق عرف راجہ گروپ سے تھا، طلعت محمود عرف یوسف سانحہ صفورہ میں ملوث دہشت گردوں کا قریبی ساتھی بھی بتایا جا رہا ہے۔

 

دہشت گرد کے خلاف سی ٹی ڈی میں مقدمہ بھی درج ہے۔ مقابلے کے بعد بم ڈسپوزل اسکواڈ نے جائے وقوعہ کا دورہ کیا، بی ڈی ایس انچارج عابد شاہ کے مطابق دہشت گردوں کے ٹھکانے سے ملنے والی خودکش جیکٹ میں دس کلو بارودی تھا، دستی، ڈیٹونیٹر ایمونیشن اور بارود تیار کرنے کا سامان بڑی تباہی مچاسکتا تھا۔ اہل علاقہ کے مطابق دہشت گردوں کا ٹھکانہ ڈیڑھ ماہ سے خالی تھا، اس سے پہلے کچھ افراد اس مکان میں بیٹھ کر پراپرٹی کاکام کرتے تھے۔ پولیس نے دہشت گردوں کے ٹھکانے سے دیگر شواہد تحویل میں لے کر مکان کوسیل کر دیا ہے۔

عطاء سبحانی  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں