نواز شریف،شاہد خاقان عباسی کیخلاف غداری کیس کی سماعت 19 نومبر تک ملتوی

لاہور(پبلک نیوز) لاہور ہائیکورٹ نے دو سابق وزرائے اعظم نواز شریف اور شاہد خاقان عباسی کیخلاف بغاوت کی کارروائی سے متعلق کیس کی سماعت ملتوی کر دی، اگر نواز شریف پیش نہیں ہو سکتے تو حلف نامے کے ساتھ حاضری معافی کی درخواست دیں، لاہور ہائی کورٹ کی جانب سے حکم۔

 

لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی کی سربراہی میں فل بنچ نے نواز شریف اور شاہد خاقان عباسی کے خلاف غداری کے مقدمے کے اندراج سے متعلق درخواستوں پر سماعت کی، شاہد خاقان عباسی اور سرل المیڈا عدالت میں پیش ہوئے، نواز شریف کے پیش نہ ہونے پر عدالت نے نواز شریف کے وکیل سے استفسار کیا کہ کیا نواز شریف نے حاضری سے استثنیٰ کی درخواست دی ہے۔

 

نواز شریف کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ حاضری سے استثنی کی درخواست دائر کی گئی ہے، عدالت نے نواز شریف کے وکیل کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپکی درخواست کے ساتھ حلف نامہ نہیں ہے۔ عدالت نے حکم دیا کہ آئندہ سماعت پر نواز شریف پیش ہوں یا حلف نامے کے ساتھ درخواست دیں۔

 

عدالت نے سرل المیڈا کی شہریت کے بارے میں استفسار کیا تو عدالت کو آگاہ کیا گیا کہ سرل المیڈا پاکستانی شہریت رکھتے ہیں۔ لاہور ہائی کورٹ میں دائر درخواستوں میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ نواز شریف کیخلاف بغاوت کے الزام کے تحت کارروائی کی جائے۔ کیس کی مزید سماعت 19 نومبر کو ہو گی۔ عدالت نے آئندہ تاریخ سماعت پر دو سابق وزرائے اعظم کے خلاف غداری کے مقدمے کے اندراج سے متعلق درخواستوں کے قابل سماعت ہونے سے متعلق دلائل طلب کر لیے ہیں۔

عطاء سبحانی  1 ماه پہلے

متعلقہ خبریں