مڈ ٹرم انتخابات میں شکست، ڈونلڈ ٹرمپ بوکھلاہٹ کا شکار ہو گئے

پبلک نیوز: مڈ ٹرم انتخابات میں لگنے والے دھچکے پر ڈونلڈ ٹرمپ بوکھلاہٹ کا شکار ہو گئے۔ اپنے ہی اٹارنی جنرل جیف سیشنز کو عہدے سے ہٹا دیا۔ میڈیا نمائندے کو بُرا بھلا کہا اور مائیک چھین لیا۔

تفصیلات کے مطابق ڈونلڈ ٹرمپ وسط مدتی انتخابات میں ناکامی کے بعد آپے سے باہر ہو گئے۔ ٹرمپ نے اٹارنی جنرل جیف سیشنز کو عہدے سے فارغ کر دیا۔ جیف سیشنز کو ہٹا کر محکمہ انصاف میں ان کے چیف آف اسٹاف میتھیو جی ویٹاکر کو قائم مقام اٹارنی جنرل نامزد کر دیا۔

جیف سیشنز نے 2016 کے صدارتی انتخاب میں روسی مداخلت کی تحقیقات کے معاملے سے خود کو علیحدہ رکھا تھا۔ اس فیصلے پر صدر ٹرمپ اٹارنی جنرل سے ناراض تھے۔ رواں سال اگست میں صدر ٹرمپ نے جیف سیشنز پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ محکمۂ انصاف کا کنٹرول سنبھالنے میں ناکام رہے ہیں۔

ادھر وائٹ ہاؤس میں پریس کانفرنس کے دوران امریکی انتخابات میں مبینہ روسی مداخلت سے متعلق سوال پر بھی ٹرمپ بھڑک اٹھے، صحافی کو بُرا بھلا کہا، اس سے مائیک چھین لیا گیا اور پریس کارڈ بھی معطل کر دیا۔

ٹرمپ نے کہا انتخابی مہم کا حصہ نہ بننے والے ریپبلکنز کو شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ صدر ٹرمپ نے ڈیموکریٹس کو دھمکی دی کہ اگر ایوان نمائندگان نے ٹرمپ اور ری پبلکن افراد کے خلاف تحقیقات شروع کیں اور نوٹسز جاری کئے تو جواب میں وہ بھی سینیٹ میں ری پبلکن اکثریت کے ذریعہ ایسی ہی جوابی کارروائی کریں گے۔

حارث افضل  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں