"امریکی افواج میں 20ہزار سے زائد خواتین اہلکاروں کا ریپ کیا گیا"

پبلک نیوز: امریکی افواج میں خواتین اہلکاروں کےساتھ جنسی ہراسانی اور زیادتی کے ریکارڈ واقعات نے فوجی میں ہلچل مچا دی۔ 2018 میں 20 ہزارپانچ سوسےزائد واقعات رپورٹ ہونے پر سیکرٹری دفاع کا جنسی ہراسانی کو جرم قرار دینے کا مطالبہ۔

امریکا کی بری، بحری، میرین اور فضائیہ میں خواتین اہلکاروں کے ساتھ جنسی ہراسانی اورز یادتی کے واقعات بڑھنےلگے۔ 2018 میں خواتین کے ساتھ 20 ہزار 500 واقعات پیش آئے۔ جبکہ سال 2016 میں ایسے واقعات کی تعداد 14 ہزار 900 ریکارڈ کی گئی تھی۔

رپورٹ کے مطابق 85 فیصد سے زائد واقعات میں متاثرہ فوجی خواتین کو اپنے حملہ آور کے بارے میں معلوم تھا اور بیشتر حملہ آور ان کے سینئر افسران تھے۔ مسلح افواج کا حصہ بننے والی 17 سے 24 برس کی خواتین اہلکار سب سے زیادہ متاثر ہوئیں۔

ہرتین میں سے صرف ایک کیس کو حکام کےسامنے رپورٹ کیا گیا۔ زیادتی کے بڑھتے واقعات پر قائم مقام سیکرٹری دفاع نے فوج میں جنسی ہراسانی کو ’جرم‘ قرار دینے کا مطالبہ کر دیا۔

احمد علی کیف  5 ماه پہلے

متعلقہ خبریں