کوٹ ادو: پسند کی شادی جرم، لڑکے کے والدین کو 2لڑکیاں ونی اور زمین دینے کا حکم

کوٹ ادو (غلام حسین) تھانہ دائرہ دین پناہ کی حدود میں ظلم کی انتہا پسند کی شادی جرم بن گیا۔ پنچائیت نے لڑکے کے والدین کو 2 لڑکیاں ونی اور زمین دینے کا حکم سنا دیا، جبکہ کہا گیا کیا پنچائیت کے فیصلے پر عمل نہ کیا گیا تو علاقے سے پورے خاندان کو نکال دیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق کوٹ ادو تھانہ دائرہ دین پناہ کی حدور میں پنچائیت کا حکم غریب خاندان کے ساتھ انسانیت سوز سلوک ہونے لگا، کچھ قبل پسند کی شادی کرنے پر گاؤں کے با اثر شخص رب نواز کی سربراہی میں پنچائیت نے لڑکے کے والدین کو 2 لڑکیاں ونی کرنے اور زمین دینے کا حکم دیا ہے۔

متاثرہ خاندان کا کہنا ہے کہ لڑکی کے ورثاء نے جینا حرام کر دیا ہے۔ گھر آکر فائرنگ بھی کی ہے جس کے نشانات موجود ہیں اور قتل کی دھمکیاں بھی دی جا رہی ہیں۔

پولیس نے بااثر افراد کے خلاف کارروائی کرنے کی بجائے الٹا متاثرہ خاندان کے بھائی اور ماں پر مقدمہ درج کر دیا ہے جبکہ پنچائیت میں کہا گیا ہے کہ فیصلہ پر عمل نہ کیا گیا تو لڑکے کے خاندان کو علاقہ سے نکال دیا جائے گا۔

احمد علی کیف  10 ماه پہلے

متعلقہ خبریں