مودی سرکار میں مسلمانوں کا جینا محال، اب نماز کی ٹوپی اوڑھنا بھی جرم بن گیا

پبلک نیوز: مودی سرکار میں مسلمانوں کا جینا محال، اب نماز کی ٹوپی اوڑھنا بھی جرم بن گیا۔ دہلی کے قریب انتہا پسند ہندوؤں نے مسلمان نوجوان کے سر سے نماز کی ٹوپی کھینچ لی اور  کپڑے بھی پھاڑ ڈالے۔

 

نماز کی ٹوپی اوڑھنا بھی بھارتی مسلمانوں کا جرم بن گیا۔ دہلی کے قریب گڑگاؤں میں نماز پڑھ کر مسجد سے آنے والے نوجوان پر انتہا پسند ہندؤوں نے سر عام تشدد کیا۔

 

انتہا پسندوں نے 25 سالہ برکت عالم کے سے نماز کی ٹوپی کھینچ لی۔ نمازی نوجوان کو مارا پیٹا، کرتا پھاڑ دیا، جے رام کے نعرے لگانے کا حکم بھی دیا۔ مسلمان نوجوان نے نعرے لگانے سے انکار کیا تو اسے مزید مارا پیٹا گیا۔ نوجوان کی چیخ و پکار پر دیگر مسلمان پہنچے تو جنونی ہندو بھاگنے پر مجبور ہو گئے۔

 

پولیس نے مقدمہ تو درج کر لیا لیکن سی سی ٹی وی فوٹیج ہونے کے باوجود ملزموں کی شناخت نہ ہونے کے بہانے بنائے جا رہے ہیں۔

حارث افضل  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں