6 ستمبر، پاکستان آرمی نے بھارتی فوج کو شکست کی صورت میں ناشتہ کروایا

 

پبلک نیوز: 6 ستمبر دفاع کا وہ دن جب سوہنی دھرتی کے جری جوانوں نے بھارتی افواج کا غرور مٹی میں ملا دیا اور پاکستان کے دفاع کو نا قابل تسخر بنا دیا۔ پاک فوج کی بہادری اور فتح کے قصے بھارتی ہی سنانے پر مجبور ہو گئے۔

 

6 ستمبر 1965 کو بھارتی فوج انٹر نیشنل بارڈر کو کراس کر کے پاکستان میں داخل ہوئی۔ ان کا ارادہ تو 7 ستمبر کو لاہور ناشتہ کرنے کا تھا لیکن پاکستان کی بہادر افواج نے ایسا ناشتہ پیش کیا کہ بھارتی فوج آج تک اس کا ذائقہ نہیں بھول پائی۔ پوری قوم نے یکجا ہو کر بھارتی فوج کو ہر محاذ پر بد ترین شکست کی صورت میں ناشتہ پیش کیا۔

 

 

بھارتی جنرل ہربخش سنگھ نے بھی اپنی کتاب وار ڈسپیچز میں پاک فوج کی بہادری کا اعتراف کیا اور پاک فوج کے آرٹلری ڈویژن کو اس کا فیصلہ کن ہتھیار قرار دے کر خراج تحسین پیش کیا۔ بھارتی پنجاب کے وزیراعلیٰ کیپٹن امریندر سنگھ کا کہنا تھا کہ اس وقت کے بزدل آرمی چیف جے این چودھری نے پاک فوج کی بہادری سے ڈر کر مشرقی پنجاب سے افواج کو پیچھے ہٹنے کا حکم دیا تھا۔

 

پوری دنیا کے میڈیا نے بھارتی شکست سے متعلق غیر جانبدارانہ رپورٹنگ کرتے ہوئے بھارتی سورمائوں کی کھوکھلی بہادری اور میدان جنگ سے بھاگنے سے متعلق خبریں شائع کیں۔ خدا کی کرنی ایسی ہوئی کہ بھارتی فوج نے اپنی بزدلی کا خود ہی اشتہار دے دیا۔ انڈین ایکسپریس کے مطابق بھارتی فوج نے 1965 کی جنگ میں پاک فوج سے  ڈر کر مقابلہ کیا تھا، غلطی سے چھپے اشتہار نے بھارتی فوج کی بزدلی کا پول کھول دیا۔

 

 

پاکستانی قوم ہر سال 6 ستمبر یوم دفاع کے طور پر منا کر نئے جذبے سے پاک وطن کے چپے چپے کے دفاع کا عہد کرتی ہے اور بھارتی فوج اس ناشتے کو یاد کرتی ہے جو پاک فوج اور پاکستانی قوم نے اسے پیش کیا تھا۔

 

احمد علی کیف  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں