سموگ کیا ہے؟

پبلک نیوز: گزشتہ 2 سال سے خصوصاً لاہور اور گردونواح کے علاقوں کے رہائشی 'سموگ' کے مسئلہ سے دو چار ہیں۔ پچھلے 2 سال سے سردیوں میں آنے والی سموگ مختلف بیماریوں کا باعث بنتی ہے۔ سموگ سے کس طرح بچا جا سکتا ہے۔

سموگ دھوئے اور دھند کے مرکب کو کہا جاتا ہے جب یہ اجزا ملتے ہیں تو سموگ پیدا ہوتی ہے۔ اس دھویں میں کاربن مونو آکسائید، نائڑوجن آکسائیڈ میتھن جیسے زہریلے مواد شامل ہوتے ہیں۔

گلے میں خراش ہونا، ناک اور آنکھوں میں چھبن کا احساس ہونا انسانی جسم پر سموگ کا پہلا اٹیک ہے۔ جبکہ ایسے لوگ جو سینے پھیپھڑے اور سانس کی بیماریوں میں مبتلا ہوتے ان کے لیے سموگ مزید بیماریوں کا پیش خیمہ ہوتا ہے۔

طبعی ماہر ڈاکڑ عون کا کہنا ہے کہ سموگ میں شہری چہرے کو ڈھانپ کر رکھیں اور صبح اور شام کے اوقات میں گھر کے دروازے اور کھڑکیاں بند کر کے رکھیں۔

چیف میڑولجسٹ ریاض خان نے گزشتہ برسوں کی نسبت اس سال کم سموگ کی نوید سنائی ہے۔ سموگ انسانی صحت کے ساتھ ساتھ درختوں کے لیے بھی نقصان دہ ہے سموگ کی وجہ سے درختوں کے مسام بند ہو جاتے ہیں جو آکسیجن کی کمی کا سبب بنتے ہیں۔

حارث افضل  4 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں