امریکی دفترِ خارجہ نے پاکستان کے آئی ایم ایف سے قرض لینے کی وجہ بتا دی

واشنگٹن (پبلک نیوز) امریکی دفتر خارجہ کی ترجمان حیدر نوراٹ نے کہا ہے کہ انٹرنیشنل مانیٹری فنڈ(آئی ایم ایف) سے قرضہ لینے کی وجہ چینی قرضے ہیں جو پاکستان کے لیے مشکل تر ہوتے جا رہے ہیں۔

محکمہ خارجہ کی ترجمان نے کہا ہے کہ پاکستانی حکومت کو قرضوں کی وجہ سے مشکلات کا سامنا ہے اور معاشی مسائل کی وجہ سے ہی پاکستان نے بین الاقوامی مالیاتی ادارے کو باضابطہ درخواست دی ہے۔ آئی ایم ایف نے پاکستان سے قرضوں کی بارے میں مکمل اور شفاف معلومات مانگی ہیں بالخصوص چین سے لیے گئے قرضوں کی تفصیلات پر زور دیا ہے۔

آئی ایم ایف نے ساتھ ہی پاکستان کو امریکی تحفظات سے بھی آگاہ کیا ہے۔ پاکستان نے چین کی حکومت اور بینکوں سے تقریباً پانچ ارب ڈالر کا قرض لے رکھا ہے۔ امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو پہلے ہی خبردار کر چکے کہ آئی ایم ایف پاکستان کو چینی قرضے اتارنے کے لیے مزید رقم فراہم نہ کرے۔

واضح رہے کہ پاکستانی وزیرخزانہ اسد عمر نے اپنی معاشی ٹیم کے ہمراہ انڈونیشیا میں آئی ایم ایف کی سربراہ کرسٹین لیگارڈ سے ملاقات کی تھی جس میں پاکستان کی موجودہ مالی صورتحال کا جائزہ لیا گیا۔

ذرائع کے مطابق ان حالات میں جب پاکستان نہایت مشکل صورتحال سے نبرد آزما ہے۔ امریکی بیان سے ان خبروں کو تقویت ملتی ہے کہ امریکا نے سفارتی دباؤ ڈال کر پاکستان کے معاشی بحران میں اضافہ کیا ہے۔

احمد علی کیف  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں