سستے رمضان بازاروں میں مہنگائی کا راج

احترام رمضان کہاں گیا؟ سستے رمضان بازاروں میں مہنگائی کا راج۔ ناقص، ملاوٹ شدہ، گلی سڑی اشیاء، سبزیاں اور پھل سستے رمضان بازاروں میں فروخت ہونے لگے۔

 

ملک میں مہنگائی کا جن بے قابو، پٹرول مہنگا ہونے کے ساتھ ہی دیگر اشیا کی قیمتیں بھی آسمان کو چھونے لگیں۔ مہنگائی نے سفید پوش طبقے کا جینا محال کردیا۔

 

منافع خور مافیا رمضان المبارک میں بھی باز نہ آیا۔ بازار سے کم ریٹ کے دعوے بھی غلط ثابت۔ رمضان بازاروں میں گلے سڑے ٹماٹر، چینی کے کھلے پیکٹ سٹالز پر فروخت ہونے لگے۔ جن اشیا پر سب سڈی دی گئی وہ بازار میں دستیاب ہی نہیں۔

 

تربوز باہر 30 روپے کلو اور رمضان بازار میں 36 روپے فروخت ہو رہا ہے۔ بغیر پکے سبز لیموں، خراب آلو، غیرمعیاری گوشت سٹالز پر بکنے لگا۔ ان ٹرینڈ عملے نے انتظار میں کھڑے صارفین کی قطاروں کو مزید طویل کردیا۔

 

دوسری جانب غیر معیاری اشیا کو دیکھ کر شہری پھٹ پڑے۔ شہریوں کا کہنا ہے کہ اربوں روپے خرچ کرنے کے باوجود سستے رمضان بازاروں کا فائدہ؟ بہتر تھا کہ یہ رمضان بازار لگائے ہی نہ جاتے۔

حارث افضل  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں