خاتون تشدد کیس: اسما نے سپیشل جوڈیشل مجسٹریٹ کو اپنا بیان ریکارڈ کروا دیا

لاہور (پبلک نیوز) اسما نے سپیشل جوڈیشل مجسٹریٹ کو اپنا بیان ریکارڈ کروا دیا بیاں کی کاپی پبلک نیوز نے حاصل کر لی۔

 

اسما نے سپیشل جوڈیشل مجسٹریٹ کو اپنا بیان ریکارڈ کروا دیا، بیان میں ان کا کہنا تھا کہ فیصل اتوار کی رات 2 دوستو کو گھر لایا اور مجھے ان کے ساتھ شراب پینے اور ڈانس کرنے کو کہا۔ فیصل نے میرے پاؤں باندھ دئیے اور مارنا شروع کر دیا۔ تین ملازم راشد امجد اور فرزانہ میرے پاس تھے، میں باہر بھاگی تو اس نے گٹر کا ڈھکن سر پر مارا۔ فیصل نے راشد سے کہا اس کی ٹنڈ کرنی ہے بال اتارنے والی مشین لاؤ۔ راشد اور فیصل نے میرے بال اتار دئیے۔

 

فیصل نے منہ ہر تکیہ رکھ کر مجھے مارنے کی کوشش کی۔ مجھے ملازمہ کے ساتھ کمرے میں بند کر دیا اسی کے فون سے سہیلی کو فون کیا۔ سہیلی وہاں پہنچی اور مجھے تھانے لے گئی۔ پولیس والوں سے کہا میرا میڈیکل کراو میرے کان کا پردہ پھٹ گیا۔ پولیس اہلکاروں نے کہا 5 ہزار روپے لاؤ تو میڈیکل ہو گا۔ پولیس نے نہ کوئی رپورٹ دی نہ میڈیکل کرایا روتی ہوئی تھانے سے باہر آ گئی۔

حارث افضل  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں