لاہور: ینگ ڈاکٹرز کے احتجاج کا پانچواں روز، مریضوں کو شدید مشکلات کا سامنا

لاہور(سدرہ غیاث) سرکاری ہسپتال پانچویں روز بھی احتجاج کی زد میں، دوسرے شہروں سے آئے مریضوں کو او پی ڈی بند ہونے کے باعث پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے، علاج معالجے کیلئے مریض دہائیاں دیتے رہے گئے۔

 

تبدیلی سرکار پنجاب میں صحت کی بنیادی سہولیات دینے میں بڑی طرح ناکام ہو گئی، مریض درد سے بلکتے رہے، کوئی مسیحا مریضوں کو دیکھنے کے لیے موجود ہی نہیں، ہیلتھ الائنس کا کہنا ہے کہ پنجاب میں ایم ٹی آئی ایکٹ نا منظور، دیگر شہروں سے آئے مریض خوار ہو کر رہے گئے۔ مریضوں کا کہنا ہیں کہ خدارا وزیراعظم عمران خان انطکا نوٹس لیں، مریض تڑپتے رہے، علاج کے لیے دہائی دیتے رہے لیکن او پی ڈی مخں تالے دیکھ کر واپس جاتے رہے۔

 

پنجاب کے بڑے سرکاری اسپتال میو، جناح ، جنرل، شیخ زید اور دیگر آنے والے ہزاروں مریض کو اوپی ڈی بند ہونے کی وجہ مشکلات کا سامنا۔ مریض کہتے ہیں سخت گرمی میں خوار ہو رہے ہیں لیکن ڈاکٹرز کو مریضوں کی کرائی پرواہ نہیں،ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کا کہنا ہے کہ جب تک مطالبات نہیں مانے جاتے، ہڑتال اسی طرح سے جاری رکھیں گے۔

عطاء سبحانی  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں