مائزہ حمید، تہمینہ دولتانہ کے رشتہ دار سرکاری زمینوں پر قابض

لاہور(پبلک نیوز) ن لیگی ایم این اے مائزہ حمید اور سابق ممبر قومی اسمبلی تہمینہ دولتانہ کے خاندان اینٹی کرپشن کے نشانے پر آگئے۔

اینٹی کرپشن نے مسلم لیگ ن کی ایم این اے مائزہ حمید کے شوہر عمر ارشد گجر اور سینئر رہنما مسلم لیگ ن تہمینہ دولتانہ کے بھائی میاں زاھد دولتانہ کو کل 29 مارچ بروز سوموار طلب کر لیا ڈی سی وہاڑی نے ڈی جی اینٹی کرپشن پنجاب کو مائزہ حمید کے شوہر عمر ارشد گجر اور تہمیہ دولتانہ کے بھائی میاں زاھد دولتانہ کے خلاف اندراج مقدمہ کے دو الگ الگ ریفرنس بھیج دیئے۔

ڈی سی وہاڑی کے ریفرنس کے متن کے مطابق مائزہ حمید کے خاوند عمر ارشد گجر وہاڑی میں محکمہ انہار کی 63 کنال قیمتی سرکاری اراضی پر قابض ہیں، انہوں نے یہ قبضہ محکمہ انہار کے افسران و اہلکاروں کے ساتھ ملی بھگت کر کے کیا جبکہ میاں زاھد دولتانہ گزشتہ پندرہ سال سے محکمہ انہار کی 48 ایکڑ زمیں پر قابض ہیں۔

ریفرنس کے مطابق میاں زاھد دولتانہ نے بھی سیاسی اثرورسوخ استعمال کرتے ہوئے محکمہ انہار کے افسران کی ملی بھگت سے اسلام ہیڈورکس ڈویژن کی زمین پر قابض ہیں۔ زاھد دولتانہ اور عمر ارشد گجر نے محکمہ انہار کے افسران کی ملی بھگت سے سرکاری خزانے کو کروڑں کا نقصان پہنچایا۔

معاملے کی مکمل چھان بین اور بے لاگ تحقیقات کے لئے ڈی جی اینٹی کرپشن پنجاب نے ریجنل ڈائریکٹر ملتان کو انکوائری کا حکم دے دیا مکمل انکوائری کے بعد تمام مفادکنندگان کے خلاف قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں