سحروافطار کے دوران لوڈ شیڈنگ نہیں ہو گی

اسلام آباد (پبلک نیوز) وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت رمضان المبارک کے پیش نظر اشیاء ضروریہ کی دستیابی اور قیمتوں کے حوالے سے اعلی سطح اجلاس منعقد ہوا جس اجلاس میں وفاقی وزراء محمد حماد اظہر، سید فخر امام، عمر ایوب خان، معاونین خصوصی ڈاکٹر ثانیہ نشتر، ڈاکٹر شہباز گل، متعلقہ وزارتوں کے سیکریٹریز، چیئرمین ایف بی آر، چیف کمشنر اسلام آباد اور مینیجنگ ڈائریکٹر یوٹیلٹی اسٹوری کارپوریشن نے شرکت کی جبکہ ویڈیو لنک سے صوبائی چیف سیکریٹریز شریک ہوئے۔

ینیجنگ ڈائریکٹر یوٹیلٹی اسٹورز کارپوریشن نے اجلاس کو آگاہ کیا کہ 20کلو آٹے کا تھیلا 800روپے ، چینی 68روپے فی کلو اور گھی 170 روپے فی کلو پر ملک بھر کے یوٹیلٹی اسٹورز پر دستیاب ہے۔ اس وقت یوٹیلٹی اسٹورز سے یومیہ 2600 ٹن آٹا ، 2000 ٹن چینی اور 1200 ٹن گھی فروخت ہو رہا ہے۔

چیف کمشنر اسلام آباد نے آگاہ کیا کہ اسلام آباد میں متعد دمقامات پر سستے بازار قائم کیے گئے ہیں جن میں اشیاء ضروریہ کم قیمتوں پر دستیاب ہیں۔ اس کے علاوہ کرونا وبا ء کے پیش نظر موبائل وین کے ذریعے بھی اشیاء ضروریہ دستیاب ہوں گی۔

چیف سیکریٹریز پنجاب اور خیبر پختونخوا نے آگاہ کیا کہ چینی اور آٹے کی وافر مقدار میں دستیابی اور مقرر شدہ نرخوں پر دستیابی کو یقینی بنایا جائے گا۔

وزیر توانائی عمر ایوب خان نے بتایا کہ سحری اور افطار کے اوقات میں کوئی غیر اعلانیہ بجلی کی لوڈ شیڈنگ نہیں کی جائے گی۔

وزیر اعظم نے ہدایت دی کہ رمضان المبارک میں اشیاء ضروریہ کی دستیابی اور قیمتوں کی سخت نگرانی کی جائے تاکہ غریب طبقے کو کسی مشکل کا سامنا نا ہو۔ رمضان المبارک میں ناجائز منافع خوروں اور ذخیرہ اندوزوں کے خلاف قانونی کارروائی کو جاری رکھا جائے۔ رمضان بازاروں میں کرونا وباء سے متعلقہ ایس او پیز پر عمل درآمد کو بھی یقینی بنایا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں