ایف بی آر نے ٹیکس وصولیوں میں اہم سنگ میل عبور کر لیا

لاہور (پبلک نیوز) ایف بی آر نے اپریل2021  میں بلند ترین محصولات اکھٹی کیں۔ رواں مالی سال کے دس ماہ میں ٹیکس وصولی میں 14 فیصد اضافہ ہوا۔ رواں مالی سال کے پہلے دس ماہ میں 3780 ارب روپے کا نیٹ رینیو حاصل کیا ہے۔

حاصل کردہ ٹیکس مقر ر کردہ ہدف3637 ارب روپے سے143 ارب زائد ہے۔ گزشتہ مالی سال اس عرصہ کے حاصل کردہ نیٹ ریونیو 3320 ارب روپے کے مقابلے میں 14 فیصد اضافہ حاصل ہوا ہے۔ اپریل میں ریونیو نیٹ کولیکشن 384 ارب روپے رہا جبکہ مطلوبہ اضافہ 242 ارب روپے تھا۔ مقرر کردہ ہدف کے مقابلے میں 159 فیصد اضافہ حاصل ہوا۔

پچھلے سال اپریل کے حاصل کردہ نیٹ ریوینیو240ارب روپے کے مقابلے میں57 فیصد اضافہ حاصل ہوا۔ اپریل میں 57 فیصد اضافہ تاریخی ہے جو کہ مارچ میں حاصل کردہ 46 فیصد اضافہ سے بھی زائد ہے۔ اپریل کے آخری دن اختتام تک اور بک ایڈجسٹمنٹ کی مد میں حاصل ہونے والی وصولیوں کے بعدمحصولات کی تعداد میں مزید اضافہ متوقع ہے۔

رواں مالی سال کے پہلے 10 ماہ میں گراس ریونیو میں 16 فیصد کا اضافہ ہوا جو پچھلے سال 3438 ارب روپے کے مقابلے میں3976 ارب روپے رہا۔ رواں مالی سال اب تک 195 ارب روپے کے ریفنڈز جاری کئے جا چکے ہیں۔ پچھلے سال اس عرصہ میں 118 ارب روپے کے ریفنڈ تھے۔ اس سال اب تک ریفنڈز کے اجراء میں 65فیصد اضافہ حاصل ہوا ہے۔ ریفنڈز کی تیز تر ادائیگی اس بات کا ثبوت ہے کہ ایف بی آر مختلف صنعتوں کو درپیش لیکویڈیٹی مسائل کو حل کرنے میں کوشاں ہے۔

یکم مئی 2021 تک ٹیکس سال 2020 کے لئے انکم ٹیکس گوشوارے داخل کرنے والوں کی تعداد29 لاکھ ہو چکی ہے۔ ٹیکس گوشوارے داخل کرنے والوں کی تعداد میں 12فیصد اضافہ حاصل ہوا ہے۔ ٹیکس گوشوارں کے ساتھ ادا شدہ ٹیکس 50.6ارب روپے رہا جو کہ پچھلے سال اس عرصہ میں 33.1ارب روپے تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں