تعلیمی اداروں میں بچوں کو سزا دینے کیخلاف سندھ حکومت کا بڑا اقدام

کراچی (پبلک نیوز) محکمہ اسکول ایجوکیشن نے ڈرافٹ رولز سندھ پروہبیشن آف کارپورل پنشمنٹ ایکٹ 2016 کابینہ میں پیش کیا۔ قانون کے تحت تعلیمی اداروں میں بچوں کو سزا دینا جرم ہے۔

قانون کے تحت بچوں کو جنسی استحصال کرنے کے خلاف بھی سخت سزا تجویز کی گئی ہے۔ تعلیمی اداروں میں مدارس کو بھی شامل کیا گیا ہے۔ کسی بچے کو جسمانی، ذہبی و جذباتی نقصان پہنچانا جرم ہوگا۔ تمام تعلیمی اداروں میں چائلڈ پروٹیکشن کمیٹی قائم کی جائے گی۔

ترجمان وزیراعلیٰ سندھ کا کہنا تھا کہ کمیٹی میں ادارے کا سربراہ، رکن انتظامیہ اور والدین کے نمائندے شامل ہونگے۔ کمیٹی سزا کی شکایات کا جائزہ لے کر کیس پولیس کو بھیجے گی۔ محکمہ اسکول ایجوکیشن، سندھ چائلڈ پروٹیکشن اتھارٹی قائم کرے گی۔ اتھارٹی میں 1121 ہیلپ لائن قائم کی جائے گی۔ تعلیمی اداروں میں بچوں پر تشدد کے خلاف آن لائن شکایتیں بھی درج ہو سکیں گی۔ کابینہ نے رولز منظور کر دئے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں