غزہ: براہ راست نشریات کے دوران عمارت تباہ

غزہ(ویب ڈیسک) برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی عربی کی لائیو کی لائیو نشریات کے دوران اسرائیلی حملے سے غزہ میں ایک عمارت تباہ ہو گئی۔ کیمرے کی آنکھ نے ان مناظر کو محفوظ کر لیا .

تفصیلات کے مطابق اسرائیلی حملوں کا نشانہ بننے کے بعد غزہ شہر میں ایک عمارت براہ راست بی بی سی ٹی وی کی رپورٹ کے دوران منہدم ہو گئی۔ بی بی سی عربی کے رپورٹر عدنان البرش اور ان کی ٹیم نے اس حملے کے دوران بھی اپنی نشریات جاری رکھیں۔ یہ رپورٹ بدھ کے روز سامنے آئی جب اسرائیل کی جانب سے تشدد میں تیزی دیکھی گئی ہے۔

دوسری جانب ظالم اسرائیل کے غزہ کی محصور پٹی کے مختلف علاقوں پر حملے جاری ہیں۔ شہدا کی تعداد 137 ہو گئی۔شہداء میں31 بچے اور 19 خواتین بھی شامل ہیں۔ اسرائیلی حملے کے بعد غزہ کے علاقے کھنڈرات کا منظر پیش کرنے لگے ہیں اور ہر طرف دھواں، آگ اور عمارتوں کا ملبہ ہے۔ گزشتہ روز اسرائیلی حملوں میں ایک گھر کو نشانہ بنایا گیا جس کے نتیجے میں بچوں سمیت سات افراد ہلاک ہوگئے.

فلسطین کی وزارت مذہبی امور کا کہنا ہے کہ اسرائیل نے ایک مسجد پر بمباری کی ہے۔اسرایلی بربریت لگاتار پانچویں رات بھی جاری رہی ، فلسطینی اتھارٹی نے تصدیق کی ہے کہ مغربی کنارے میں اسرائیلی سکیورٹی فورسز کے ساتھ جھڑپوں میں 11 افراد جاں بحق ہوگئے۔

دریں اثنا حماس کی جانب سے سیکڑوں راکٹ داغے گئے جن میں سے بیشتر کو اسرائیل کے خودکار ڈیفنس سسٹم نے فضا میں ہی تباہ کردیا تاہم کچھ شہروں میں بھی گرے۔ اطلاعات ہیں کہ راکٹ حملوں میں اب تک سات اسرائیلی مارے جاچکے ہیں۔ سلامتی کونسل آئندہ اتوار کو ایک اجلاس کرے گی جس میں خطے کی موجودہ صورتحال پر تبادلہ خیال کیا جائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں