چین کے جوہری پلانٹ سے تابکار مواد لیک

واشنگٹن(ویب ڈیسک) فرانسیسی ریاستی مالیاتی خدمات کی کمپنی ای ڈی ایف نے پیر کو کہا کہ اسے چین میں اپنے جوہری بجلی گھر پر غیر فعال گیسوں کی غیر معمولی افزائش کی اطلاع ملی ہے ، اور اس نے اپنے چینی شراکت دار سے پلانٹ کے اعداد و شمار کا جائزہ لینے کے لئے ایک اجلاس طلب کیا ہے۔

امریکی حکومت بھی چینی جوہری بجلی گھر میں ہونے والے لیک کے بارے میں جائزہ لے رہی ہے، ای ڈی ایف نے کہا کہ تائشان میں جوہری بجلی گھر پر غیر فعال گیسوں کی افزائش فیول راڈ میں کسی مسئلے کی نشاندہی کرتے ہیں، اور تابکاری مواد کے اخراج کی وجہ سے قریبی آبادی کو خطرہ ہو سکتا ہے۔

سی این این نے فرانسیسی کمپنی کے امریکی محکمہ کو لکھے گئے ایک خط کے حوالے سے بتایا کہ ای ڈی ایف کے انتباہ میں یہ الزام عائد کیا گیا تھا کہ چینی حفاظتی اتھارٹی گوانگ ڈونگ کے تائشان نیوکلیئر پاور پلانٹ میں تابکاری کی کھوج کے لئے قابل قبول حدود میں اضافہ کر رہی ہے تاکہ اسے بند کرنے سے بچا جا سکے۔

کمپنی کے ترجمان نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ پلانٹ میں غیر فعال گیسوں کی پیمائش چین میں زیادہ سے زیادہ درجے سے کم ہے۔ سرکاری سطح پر چلنے والا چین جنرل نیوکلیئر پاور گروپ نے اس رپورٹ کے شائع ہونے سے عین قبل کہا تھا کہ اس کے پاور اسٹیشن پر کاروائیاں حفاظتی قواعد پر پورا اترتی ہیں اور آس پاس کا ماحول محفوظ ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں