پنجاب حکومت کا جی سی یونیورسٹی سٹوڈنٹس کیلئے تاریخی اعلان

لاہور (پبلک نیوز) جی سی یونیورسٹی میں 1.84 بلین روپے کی رقم سے چار ترقیاتی منصوبوں کا آغاز۔ پنجاب حکومت گرلز ہاسٹل، سوئمنگ پول اور صوفزم سنٹر کے قیام کے لئے فنڈز فراہم کریگی۔

تفصیلات کے مطابق تینوں منصوبے بجٹ دستاویز میں پنجاب کے سالانہ ترقیاتی پروگرام کا حصہ ہیں۔ وفاقی حکومت جی سی یو لاہور کے نئے کیمس فیز 2 کے لئے1158 ملین روپے دے گئی۔ مالی سال 2021-22ء میں ان منصوبوں کے آغاز کے لئے بجٹ دستاویزات میں 410 ملین روپے مختص کئے گئے۔ 143 ملین روپے سے جی سی یو میں شیخ ابوالحسن اشھدلی تصوف، سائنس اینڈٹیکنالوجی سنٹر قائم کیا جائے گا۔ سوئمنگ پول پر 100ملین، جبکہ گرلز ہاسٹل پر 440ملین روپے کی لاگت آئے گی۔

وائس چانسلر پروفیسر اصغر یدی کا کہنا تھا کہ جی سی یو پاکستان میں اعلی تعلیم کی سب سے قدیم اور معتبر درسگاہ ہے۔ سابقہ حکومتوں کی جانب سے جی سی یو کو نظرانداز کیا جاتا رہا ہے۔ چند سو کے لئے تعمیر کردہ کیمپس میں 14ہزار طلباء زیر تعلیم ہیں۔ پاکستان بھر سے طالبات اعلی تعلیم کے لئے جی سی یو آتی ہیں۔ جی سی میں 200 طالبات کی گنجائش والا صرف ایک ہوسٹل ہے۔ سائنس بلاک میں تین سو سے زائد طلباء کی گنجائش والاچار منزلہ ہاسٹل تعمیر کیا جائے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ جی سی یو انٹر کالج اور انٹر یونیورسٹی سوئمنگ چیمپین شپ کا فاتح ہے لیکن ہمارے طلباء کو سوئمنگ پول کی سہولت میسر نہیں ہے۔ صوفی سنٹر پاکستان کی خاتون اول محترمہ بشری عمران کا اہم اقدام ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں