محرم الحرام کی آمد پر لاہور پولیس آپریشنز ونگ کا سکیورٹی پلان

لاہور (پبلک نیوز) محرم الحرام کی آمد، لاہور پولیس آپریشنز ونگ کاسکیورٹی پلان جاری۔ ڈی آئی جی آپریشنز ساجد کیانی نے کہا ہے کہ شرکاء مجالس اور جلوسوں کو محفوظ رکھنے کیلئے ہر ممکن ذرائع بروئے کا ر لائے جا ئیں گے۔ مذہنی منافرت پر مبنی لٹریچر،متنازعہ تقاریر، وال چاکنگ اور تشہیر پر سخت پابندی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ 10 ہزارسے زائدپولیس افسران واہلکارڈیوٹی کے فرائض سرانجام دینگے، 6 ایس پیز،34 ڈی ایس پیز،83 انسپکٹرز/ایس ایچ اوزتعینات ہونگے۔ شہر میں مجموعی طور پر 5235 مجالس اور650 عزاداری جلوس منعقد ہونگے۔ 610 مجالس کوکیٹیگری اے، 3471 کوبی جبکہ 1154مجالس کو سی کیٹیگری میں تقسیم کیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ 141 عزاداری جلوسوں کو کیٹیگری اے، 454 کوبی جبکہ 55کو سی کیٹیگری میں تقسیم کیا گیا ہے۔ 10ہزار سے زائد رضا کار بھی چیکنگ کے فرائض سر انجام دیں گے۔ کورونا وبا کے پیش نظر ماسک، سماجی فاصلوں سمیت حکومتی ایس او پیز پر عملدآمدیقینی بنایا جائے۔ نفرت انگیز تقاریر پر پابندی، نئے جلوسوں اور مجالس کی اجازت نہیں۔

ڈی آئی جی آپریشنز نے کہا کہ شرکاء کو مکمل تلاشی کے بعد ہی مجالس و امام بارگاہوں میں داخلے کی اجازت ہوگی۔ محرم کی آمد کے پیش نظر شہر بھر میں سرچ آپریشنز، سنیپ چیکنگ، بائیو میٹرک تصدیق سمیت حفاظتی اقدامات جاری ہیں۔ امام بارگاہوں، عزاداری جلوسوں کے روٹ میں آنے والی عمارتوں کی چھتوں پر سنائپرز تعینات ہونگے۔ مرکزی عزاداری جلوس اور مجالس کو تین درجاتی حفاظتی حصار پر مبنی سکیورٹی فراہم کی جائے گی۔

چیکنگ کے لئے میٹل ڈیٹیکٹرزاور واک تھرو گیٹس کا استعمال یقینی بنایا جائے گا۔ سکیورٹی مانیٹر کرنے کیلئے ڈویژنل اور مرکزی کنٹرول روم بھی قائم ہونگے۔ مرکزی عزاداری جلوسوں کی سی سی ٹی وی کیمروں کے ذریعے لمحہ بہ لمحہ مانیٹرنگ کی جائے گی۔ لاوڈ سپیکر ایکٹ،مجالس و جلوسوں کے اوقات کاراور روٹ کی پابندی پر عملدرآمد ہر صورت یقینی بنایا جائے گا۔ شہرکے داخلی وخارجی راستوں،بس ٹرمینلز اور ریلوے سٹیشنز پر اشخاص کی چیکنگ یقینی بنائی جائے۔

ڈولفن سکواڈ، پولیس رسپانس یونٹ اور تھانوں کی گاڑیوں کی موثر پٹرولنگ کو یقینی بنایا جائے گا۔ سکیورٹی انتظامات یقینی بنانے کے لئے شہریوں کا تعاون نا گزیر ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں