یونیورسٹیاں خصوصی طلبہ کو عمر اور فیس میں چھوٹ دیں گی

اسلام آباد (پبلک نیوز) صدر مملکت پاکستان ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ ملک کے اعلیٰ تعلیمی اداروں کو منشیات اور تمباکو کے استعمال سے پاک بنانے کی ضرورت ہے۔ یونیورسٹیوں کی انتظامیہ متعلقہ اداروں میں منشیات کی روک تھام پر توجہ دیں۔

انسداد منشیات اور خصوصی افراد کی فلاح کیلئے وائس چانسلر ز کمیٹی کا اجلاس صدر عارف علوی کی زیر صدارت منعقد ہوا۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ تعلیمی ادارے قوم کی تقدیر کی تشکیل میں مرکزی کردار ادا کرتے ہیں۔ انسداد منشیات اور تمباکو پالیسی اور بہبود خصوصی طلباء پالیسیوں کو جلد از جلد نافذ کرنے کی ضرورت ہے۔

صدر مملکت کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ منشیات اور تمباکو کے غلط استعمال کی پالیسی کو صدر پاکستان کی ہدایات کی روشنی میں حتمی شکل دی گئی۔ ایچ ای سی نے 28 جولائی 2021 کو پالیسی کی منظوری دی۔

بریفنگ کے دوران بتایا گیا کہ قائداعظم یونیورسٹی اقوام متحدہ کے دفتر برائے منشیات اور جرائم کے ساتھ مل کر مشیروں اور ماہر نفسیات کو تربیت دے گی۔ وزارت انسداد منشیات نے منشیات کے استعمال کی روک تھام ، علاج بارے معلومات فراہم کرنے کیلئے موبائل ایپ ’’زندگی‘‘ تیار کی ہے۔

آگاہ کیا گیا کہ خصوصی طلباء کو تعلیمی، تکنیکی اداروں اور یونیورسٹیوں میں داخلہ لینے کے لیے 10 سال تک عمر میں نرمی فراہم کی جائے گی۔ خصوصی طلباء کو اعلیٰ تعلیم کے لیے ٹیوشن فیس، ہاسٹل فیس اور یوٹیلیٹی بل کی چھوٹ دی جائے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں