لمبے،گھنے اور خوبصورت بالوں کیلئے 5 بہترین تیل کون سے ہیں؟‌

(ویب ڈیسک )لمبے بالوں کے لیے 5 ایسے تیل ہیں ، جو آپ کے بالوں کو لمبا کرنے میں مدد دے سکتے ہیں۔ ان کے بارے میں جانیں….. ….

لمبے بالوں کے لیے تیل: اگر آپ بھی مضبوط اور لمبے بال حاصل کرنا چاہتے ہیں تو یہ خبر آپ کی مدد کر سکتی ہے۔ ہم آپ کو کچھ ایسے تیلوں کے بارے میں معلومات دے رہے ہیں ، جو بالوں کی صحت کے لیے بہت فائدہ مند سمجھے جاتے ہیں۔ ماہرین صحت کا کہنا ہے کہ بالوں کو مضبوط بنانے کے لیے بالوں کو تیل روزانہ لگانا چاہیے۔ اس کی وجہ سے خشکی اور بال ٹوٹنے اور گرنے کا کوئی مسئلہ باقی نہیں رہتا.

بالوں کے لیے تیل کیسے فائدہ مند ہیں؟

بالوں کی نشوونما کے لیے تیل بہت فائدہ مند ہ ہوتے ہیں. تیل بالوں کی پرورش کا کام کرتے ہیں جن کی وجہ سے بال لمبے اور گھنے ہونے لگتے ہیں۔ اس کے ساتھ بالوں پر تیل کی مالش کرنے سے سر میں خون کی گردش بھی اچھی ہوتی ہےاور بالوں کو فائدہ ہوتا ہے۔

لمبے بالوں کے لیے بہترین تیل
کیسٹر ، زیتون ، ناریل ، بادام اور ٹی (چائے) ٹری آئل بالوں کے لیے بہت فائدہ مند سمجھا جاتا ہے۔ ذیل میں ان کے بارے میں جانیں .

1. ارنڈی کا تیل : ارنڈی کا تیل یعنی کیسٹر آئل بالوں کو گھنا بنانے میں سب سے زیادہ مددگار ہے۔ بالوں پر باقاعدگی سے ارنڈی کا تیل لگانے سے بال دوگنا تیزی سے بڑھتے ہیں۔ ارنڈی کا تیل تھوڑا گاڑھا ہوتا ہے اس لیے اسے کسی دوسرے تیل میں ملا کر بالوں پر لگانا چاہیے۔

2. زیتون کا تیل: زیتون کا تیل بالوں کی نشوونما کے لیے بھی اچھا سمجھا جاتا ہے۔ اس کے استعمال سے بالوں کے دیگر مسائل جیسے بال گرنا ، بال گرنا ، دو منہ والے بال اور سر میں خارش کا مسئلہ بھی ٹھیک ہونے لگتا ہے۔

3. ناریل کا تیل: بالوں پر ناریل کے تیل کی باقاعدگی سے مالش کرنے سے بالوں کی نشوونما ہوتی ہے اور بال لمبے ، گھنے ، سیاہ اور مضبوط رہتے ہیں۔ تاریخی کتابوں میں بھی بالوں کے لیے ناریل کے تیل کی بڑی اہمیت بتائی گئی ہے۔

4. بادام کا تیل: بادام کے تیل میں بہت سے وٹامنز ، منرلز اور اینٹی آکسیڈنٹس ہوتے ہیں جو بالوں کی نشوونما کے لیےضروری سمجھے جاتے ہیں، اس کی وجہ سے بال تیزی سے بڑھنے لگتے ہیں۔

5. چائے کے درخت کا تیل(ٹی ٹری آئل) :یہ ایک اہم تیل ہےجو دماغ سے متعلق مسائل کے لیے فائدہ مند ہے۔ اس میں اینٹی بیکٹیریل خصوصیات ہوتی ہیں ، جو بالوں کو صحت مند رکھنے اور انہیں تیزی سے بڑھانے میں مددگار ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں