ملکی زرمبادلہ کے ذخائر میں بڑی کمی

کراچی: جمعرات کو اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق مرکزی بینک کے پاس موجود زرمبادلہ کے ذخائر ہفتہ وار بنیادوں پر 8.6 فیصد کم ہوئے۔

15 اکتوبر کو اسٹیٹ بینک کے پاس غیر ملکی کرنسی کے ذخائر 17،492.2 ملین ڈالرز ریکارڈ کیے گئے جو کہ 8 اکتوبر کے مقابلے میں 1.65 بلین ڈالر کم تھے جبکہ 8 اکتوبر کو 19،138.4 ملین ڈالرز تھے۔ مرکزی بینک کے مطابق یہ کمی بیرونی قرضوں کی ادائیگی کی وجہ سے ہوئی ہے۔ ملک کے پاس بشمول اسٹیٹ بینک کے علاوہ بینکوں کے پاس موجود غیر ملکی کرنسی کے ذخائر 24،327.4 ملین ڈالر تھے۔

اس سے قبل 27 اگست کو ختم ہونے والے ہفتے میں مرکزی بینک کے پاس موجود زرمبادلہ کے ذخائر 20.15 بلین ڈالر کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئے تھے جب پاکستان کو بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) سے 2،751.8 ملین ڈالر کے خصوصی ڈرائنگ رائٹس کی عام الاٹمنٹ ملی تھی۔

30 مارچ 2021 کو پاکستان نے یورو بانڈز کے ذریعے 2.5 بلین ڈالر قرضہ لیا تاکہ قرض دہندگان کو منافع بخش شرح سود کی پیشکش کی جائے جس کا مقصد زرمبادلہ کے ذخائر کی تعمیر تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں