روزانہ برش کرنے کی عادت آپ کو ان خطرناک بیماریوں سے بچاتی ہے

لاہور: (ویب ڈیسک) آپ روزانہ دو بار باقاعدگی سے برش کرتے ہیں تاکہ دانتوں سے متعلق کوئی مسئلہ نہ ہو لیکن کیا آپ جانتے ہیں کہ روزانہ برش کرنے سے ناصرف دانتوں سے متعلق مسائل دور رہتے ہیں بلکہ یہ دل بلکہ نمونیا جیسی بیماریوں سے بھی بچاتا ہے۔

ماہرین کے مطابق منہ کی اچھی صفائی ناصرف آپ کو دانتوں کے سڑنے اور مسوڑھوں کی بیماریوں سے بچاتی ہے بلکہ یہ آپ کے دل کی صحت کا بھی خیال رکھتی ہے اور آپ کو سانس کی بیماریوں سے بھی بچاتی ہے۔

یورپی جرنل آف پریوینٹیو کارڈیالوجی آف دی یورپین سوسائٹی آف کارڈیالوجی (ESC) میں شائع ہونے والی ایک تحقیق کے مطابق باقاعدگی سے دانت صاف کرنے کی عادت ایٹریل فیبریلیشن اور ہارٹ فیلور کا خطرہ کم کرتی ہے۔

ماہرین کے مطابق ہمارا منہ اچھے اور برے دونوں قسم کے بیکٹیریا کے لیے ایک داخلی نقطے کا کام کرتا ہے۔ ساتھ ہی، ان میں سے کچھ بیکٹیریا اتنے خطرناک ہوتے ہیں کہ وہ آپ کو جان لیوا انفیکشن دے سکتے ہیں۔

کئی تحقیقوں میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ اگر آپ منہ کی صفائی کا خیال نہیں رکھیں گے تو یہ آپ کے خون میں بیکٹیریا اور جسم میں سوزش کا باعث بن سکتا ہے۔ اس سے ایٹریل فیبریلیشن، دل کی بے قاعدہ دھڑکن اور دل کی ناکامی کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔

دانتوں کے مسائل بہت سی سنگین بیماریوں کا سبب بن سکتی ہے۔ اس کی وجہ سے Endocarditis کا خطرہ ہو سکتا ہے۔ منہ سے بیکٹیریا خون میں جاتے ہیں اور اس کے ذریعے آپ کے دل تک پہنچ جاتے ہیں۔

منہ کی صحت کا خیال نہ رکھنے کی وجہ سے مسوڑھوں کی سنگین بیماری Periodontitis کا خطرہ ہے جس سے دل کی بیماری، شریانوں میں رکاوٹ اور فالج کا خطرہ بڑھ سکتا ہے۔ یہی نہیں منہ کے بیکٹیریا پھیپھڑوں اور سانس کی سنگین بیماریوں کا سبب بن سکتے ہیں۔ اس سے نمونیا ہونے کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔

برش اور فلاسنگ کے بعد بھی کھانے کے کچھ ذرات دانتوں کے درمیان رہ جاتے ہیں۔ اس کے لیے ماؤتھ واش کریں۔ صحت مند غذا لیں۔ شکر والی چیزوں اور مشروبات کا استعمال کم کریں۔ دانتوں کا برش ہر تین سے چار ماہ بعد تبدیل کریں۔ دانتوں کا باقاعدہ چیک اپ اور صفائی کروائیں۔ تمباکو سے پرہیز کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں