زیر حراست خاتون پر تشدد کا واقعہ، پولیس اہلکار نوکری سے برخاست

آئی جی پنجاب نے قصور میں ڈکیتی کی واردات میں زیرحراست خاتون پر تشدد کے واقعہ پر متعلقہ ڈی ایس پی اور ایس ایچ او کو معطل جبکہ پرائیویٹ خاتون کو گرفتار، ملوث لیڈی کانسٹیبل اور اہلکار کو گرفتار کرکے نوکری سے برخاست کردیا ہے۔

پنجاب پولیس کے آفیشل ٹوئٹر ہینڈل کے ذریعے کی جانے والی ایک ٹوئٹ میں بتایا گیا کہ واقعہ میں ملوث پرائیویٹ خاتون اور اہلکاروں کو قرار واقعی سزا دلوائی جائے گی۔
پنجاب پولیس میں ایسی کالی بھیڑوں کی کوئی جگہ نہیں ہے.


واضح رہے کہ گزشتہ روز ایک ویڈیو وائرل ہوئی تھی جس میں قصور تھانہ صدر میں سب انسپکٹر حیدر علی کے کمرے میں ساجدہ نامی پرائیوٹ خاتون سے کسی مقدمہ میں شامل تفتیش دو خواتین پر جوتوں سے تشدد کررہی تھی جبکہ کانسٹیبل عائشہ اسکی ویڈیو بنارہی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں