ہوٹلوں میں بند دروازوں کے پیچھے کیا ہوتا ہے؟ ہولناک انکشافات

چھٹیوں پر جانے سے پہلے کہیں آپ نے قیام کرنے کی بکنگ کے دوران ہوٹلوں کی تصاویر دیکھی ہوں گی، یا ریویوز پڑھے ہوں گے۔ تاہم، باہر سے چمکدار اور اچھی نظر آنے والی ہر چیز کا مطلب یہ نہیں ہے کہ ہر چیز وہاں موجود ہونی چاہیے جیسا کہ یہ آپ کو ظاہر کرنے کی کوشش کی جاتی ہے. جی ہاں، دنیا بھر کے 5 اسٹار اور معروف ہوٹلوں میں کام کرنے والے ملازمین نے ہوٹلوں میں کام کرنے کا اپنا تجربہ شیئر کیا۔ اس میں جو باتیں سامنے آئی ہیں وہ واقعی چونکا دینے والی ہیں۔ تو آئیے جانتے ہیں ان 5 اسٹار ہوٹلوں کے راز…

ہوٹل کے ملازمین کی بتائی گئی باتیں کافی خوفناک ہیں۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ ہوٹلوں میں کم از کم 40 فیصد بستر ایسے ہیں جہاں کسی کی موت واقع ہوئی ہوتی ہے. ان کا کہنا تھا کہ ہوٹل کے کمرے میں جس بیڈ پر آپ سو رہے ہیں، اس پر شاید کوئی مر گیا ہو۔ ہوٹل ملازمین کے مطابق اس بات کا انحصار ہوٹل کی قسم اور گاہک پر بھی منحصر ہوتا ہے تاہم دنیا میں کئی ہوٹل ایسے ہیں جہاں ہفتے میں صرف ایک موت ہوتی ہے۔’

ہوٹل کے ایک ملازم نے بتایا کہ دنیا میں بہت سے لوگ ایسے ہیں جو اپنی زندگی کا خاتمہ کرنے کے لیے چھٹیوں پر جاتے ہیں اور ایک دن وہ ہوٹل کے کمرے میں مردہ پائے جاتے ہیں. ہوٹل کے کمروں کے بند دروازوں کے پیچھے بہت کچھ ہوتا ہے جو کبھی خبروں میں نہیں آتا۔

اگر آپ بھی ہوٹل پہنچتے ہی میز پر رکھے گلاس میں پانی پینے کے عادی ہیں تو ایسا ہرگز نہ کریں. ڈیلی میل کی ایک رپورٹ کے مطابق ہوٹل کے عملے کا کہنا تھا کہ آپ سوچ بھی نہیں سکتے کہ آپ کے ہوٹل کے کمرے میں رکھا چمکتا ہوا شیشہ کتنا گندا ہو سکتا ہے۔ عملے کا کہنا تھا کہ ‘کمرہ اٹینڈنٹ پر کام اور ڈیڈ لائن کا اتنا بوجھ ہوتاہے کہ وہ شیشے کو اسی اسکرب سے صاف کرتے ہیں جس سے وہ باتھ روم صاف کرتے ہیں اور اسے اپنی جگہ پر رکھتے ہیں۔ بالآخر ان کا مقصد کمرے کو صاف ستھرا بنانا ہے۔ ایک ہوٹل ملازم کا کہنا تھا کہ میں نے برسوں دنیا کے ایک اعلیٰ ترین ریزورٹ میں کام کیا، ہوٹل کے کمروں میں ڈش واشر نہیں ہوتا تھا، اس لیے ہم باتھ روم کے اسکرب سے گلاس دھوتے تھے۔

ہوٹل کے ایک عملے نے ڈیلی میل کو بتایا کہ آپ ہوٹل میں کتنے ہی مہنگے کیوں نہ جائیں لیکن اپنا سامان بستر پر رکھنے کی غلطی کبھی نہ کریں۔ انہوں نے کہا کہ ہوٹلوں کے بستروں میں بیڈ بگ(کھٹمل) ہوتے ہیں۔ اور اگر آپ اپنا سامان بستر پر رکھتے ہیں تو اس کا مطلب ہے کہ آپ اپنے ساتھ 2-4 کھٹمل لے جائیں گے۔

عملے میں سے ایک نے کہا، ‘ہوٹلوں میں روم اٹینڈنٹ کبھی مہمان کا سامان نہیں چراتے۔ انہوں نے کہا کہ مہمان کا سامان گم ہونے کی صورت میں لوگ پہلے کمرے کے اٹینڈنٹ پر انگلیاں اٹھاتے ہیں۔ لیکن تلاشی لینے پر سامان کمرے کے اندر کہیں پڑا ہوا ملا۔ کیا آپ کو لگتا ہے کہ کوئی آپ کے پرانے آئی پیڈز چرانے پر اپنی نوکری کھونا چاہے گا؟

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں