کیا ٹماٹر کے بیج زہریلے ہیں؟

لاہور: (ویب ڈیسک) یہ خیال کیا جاتا ہے کہ ٹماٹر کے بیجوں کا استعمال نقصان دہ ہو سکتا ہے۔ جانیے کہ اس کے بیج نہ کھانے کا مشورہ کیوں دیا جاتا ہے۔

آپ سبزیوں سے لے کر سلاد اور سوپ تک بہت سی چیزوں میں ٹماٹر کا استعمال کرتے ہیں۔ ٹماٹر کو پکاتے وقت اس کے بیج نکال کر استعمال کرنا مناسب ہے، لیکن کیا ٹماٹر کے بیج واقعی زہریلے ہیں؟ اگر آپ اس کے بیج کھاتے ہیں تو کیا ہوتا ہے۔

ٹماٹر کے بیج زہریلے نہیں ہوتے لیکن ٹماٹر کے پودے میں ایک زہریلا الکلائیڈ ہوتا ہے جسے سولانائن کہتے ہیں۔ ٹماٹر کے پودے کے تنوں اور پتوں میں اس زہر کی مقدار بہت زیادہ ہوتی ہے۔

ٹماٹر میں الکلائیڈز کی موجودگی اس کے پودے کی تشکیل میں مدد دیتی ہے۔ محدود مقدار میں بیجوں کے ساتھ ٹماٹر کا استعمال آپ کو نقصان نہیں پہنچاتا لیکن اگر آپ کو پیٹ کے مسائل ہیں تو کچے ٹماٹر یا ٹماٹر کے بیج کھانے سے گریز کریں۔ یہ فطرت میں تیزابی ہے جس کی وجہ سے یہ سینے کی جلن کو متحرک کر سکتا ہے اور نظام ہاضمہ کو بری طرح متاثر کرتا ہے۔

ٹماٹر میں لائکوپین نامی اینٹی آکسیڈنٹس کی مقدار پائی جاتی ہے۔ یہ دل اور گردے کے کام کو بہتر بناتا ہے۔ یہ جسم میں کیلشیم کی سطح کو بھی درست رکھتا ہے۔ ٹماٹر کے بیجوں میں وٹامن سی اور غذائی ریشہ ہوتا ہے۔

اس کا استعمال جلد کے ساتھ ساتھ دل کی صحت، وزن کو کنٹرول کرنے اور قوت مدافعت کے لیے بھی فائدہ مند ہے۔ ٹماٹر کے بیج ہاضمے کے لیے اچھے ہیں کیونکہ یہ ہاضمے کے لیے فائبر اور امینو ایسڈ سے بھرپور ہوتے ہیں۔ یہ غذائی اجزاء کو جذب کرنے میں مدد کرتا ہے، میٹابولزم کو بہتر بناتا ہے اور آنتوں کی صحت کے لیے بھی اچھا ہے۔

ماہرین صحت کے مطابق ٹماٹر کا استعمال جسم میں اچھے کولیسٹرول کو متوازن رکھنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔ تاہم اس پر مزید تحقیق ہونا باقی ہے۔ ٹماٹر کے بیج اینٹی آکسیڈنٹس سے بھرپور ہوتے ہیں اور خلیوں کی تخلیق نو میں مددگار ہوتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں