کیا حکومت کو مدت پوری کرنی چاہیے، مریم نواز کے مؤقف میں پھر تبدیلی آ گئی

حکومت کی تبدیلی کے معاملے پر مسلم لیگ ن کی رہنماء مریم نواز کے موقف میں بڑی تبدیلی آ گئی. مریم نواز ماضی میں بیان دیتی رہی ہیں کہ حکومت کو مدت پوری کرنی چاہیے تاہم اب ان کا خیال ہے کہ اپوزیشن کو حکومت کو گھر بھیجنے کے لیے کوئی حل نکالنا چاہیے.

مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز کا کہنا ہے کہ حکومت کو گھر بھیجنے کےلیے کوئی بھی طریقہ آزمانا پڑے تو آزمانا چاہیے۔ بلال یاسین کی عیادت کے موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز کا کہنا تھا کہ ووٹ کو عزت دو کا بیانیہ اب سیاسی جماعتوں کا ہی نہیں بلکہ عوام کا بیانیہ بن گیا ہے، اب تو سیاسی جماعتوں کو عوام کے کہنے پر چلنا ہوگا، اس حکومت کی نااہلی نالائقی ساری دنیا کے سامنے ہے، عوام عذاب میں عوام مبتلا ہیں، پہلے مجھے لگتا تھا کہ اس حکومت کو مدت پوری کرنی چاہیے، لیکن اب کہتی ہوں کہ حکومت کو گھر بھیجنے کے لیے کوئی بھی طریقہ آزمانا پڑے تو آزمانا چاہیے۔

مریم نواز نے مزید کہا کہ مری کا واقعہ پوری دنیا کے سامنے ہے، وہاں لوگ برف سے نہیں بلکہ حکمرانوں کی نااہلی اور بے حسی کی وجہ سے مرے ہیں، شدید سردی میں خاندانوں کے خاندان مرتے رہے اور یہ بنی گالہ اور وزیراعلی ہاوس میں ہیٹر جلا کر سوتے رہے، وہاں لوگ 36 گھنٹوں تک مدد کے لئے پکارتے رہے لیکن کوئی ان کی مدد کو نہیں آیا، عوام کو سب پتہ ہے کہ سچ کیا ہے اور جھوٹ کیا ہے۔

نائب صدر ن لیگ کا کہنا تھا کہ بلال یاسین کے ساتھ میں نے اپنے والد اور والدہ دونوں کی انتخابی مہم کے دوران کام کیا ہے، انہوں نے نواز شریف کا ساتھ وفاداری سے نبھا کر بہت سے لوگوں کے لئے مثال قائم کی ہے، یہ پارٹی کے لئے دن رات کام کرنے والے ورکر ہیں، ایسے لوگ بہت کم ہوتے ہیں جنہوں نے وفاداری سے نوازشریف کا ساتھ نبھایا، بلال یاسین پر حملے میں ملوث افراد کے حوالے سے اب کوئی بھی بات چھپی ہوئی نہیں رہ گئی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں