’تو جھوم‘ کی دھن چوری کا معاملہ، اب فیصلہ عدالت کرے گی

کوک اسٹوڈیو پر دھن چوری کرنے کا الزام لگانے والی گلوکارہ نرملا مگھانی نے مقبول موسیقی پلیٹ فارم پلیٹ فارم کے خلاف عدالت سے رجوع کرنے کا اعلان کردیا ہے۔

نرملا نے اپنے ٹوئٹر پر جاری ایک ویڈیو پیغام میں بتایا کہ جون 2021 میں انہوں نے موسیقار ذوالفقار خان (زلفی) کو اپنی دھن بذریعہ واٹس ایپ بھیجی تھی، تاہم زلفی کی جانب سے کوئی جواب موصول نہیں ہوا۔

ویڈیو میں انہوں نے مزید بتایا کہ انہوں نے جب اپنی تیار کردہ دھن کوک اسٹوڈیو میں سُنی اور اس پر ذوالفقار خان کا نام دیکھا تو انہیں بہت دکھ ہوا، کیونکہ وہ بالکل وہی دھن تھی جو میں نے انہیں بھیجی تھی۔نرملا کے مطابق کوک اسٹوڈیو کا گانا جاری ہونے کے بعد انہوں نے زلفی کو بہت فون اور میسیجز کیے لیکن کوئی جواب نہیں آیا۔

زلفی نے ایک دن بعد فون کرکے نرملا کو بتایا کہ انہوں نے تو اپنے موبائل میں دھن ڈاؤن لوڈ بھی نہیں کی اور اب ان کا دعویٰ ہے کہ یہ ٹون پہلے سے تیار کردہ تھی۔


نرملا نے اپنے پیغام میں کہا کہ انہیں پیسوں کا کوئی لالچ نہیں، بس چاہتی ہیں کہ انہیں کریڈٹ دیا جائے۔

انہوں نے اس حوالے سے عدالت جانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ میرے اور زلفی دونوں کے فون لے کر فرانزک کیے جائیں گے تو ثابت ہوجائے گا کہ کون سچا ہے اور کون جھوٹا ہے، اب عدالت ہی فیصلہ کرے گی۔

دوسری جانب کوک سٹوڈیو نے ’تو جھوم‘ گانا چوری کرنے کے دعوؤں کو مسترد کردیا ۔ کوک سٹوڈیو نے عمرکوٹ سے تعلق رکھنے والی گلوکارہ نرملا مگھانی کے جاری سیزن کے پہلے ریلیز ہونے والے ’تو جھوم‘ کے لیے گانا چوری کرنے کے الزامات کی تردید کی ہے اور اس حوالے سے ادارے کو ایک واٹس ایپ ریکارڈنگ بھیجی گئی ہے۔

واٹس ایپ کی ریکارڈنگ سے پتہ چلتا ہے کہ زلفی نے مئی میں اپنے ساتھی کمپوزر عبداللہ صدیقی کے ساتھ ایک ویڈیو شیئر کی تھی جس میں وہ ’تو جھوم‘ کو ایک ساز کے ٹریک پر گنگنارہے ہیں اور اس کے بارے میں ان کی رائے پوچھ رہے ہیں، کوک سٹوڈیو انتظامیہ کی جانب سے بھیجے گئے پیغام میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ سیزن کے پروڈیوسر زلفی اور ایسوسی ایٹ پروڈیوسر عبداللہ صدیقی نے مگھانی کی جانب سے مبینہ طور پر اپنا ڈیمو زلفی کے ساتھ شیئر کیے جانے سے ایک مہینہ پہلے مئی میں ہی اس گانے پر کام شروع کر دیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں