روس پر جوابی وار ؛ یوکرین کا خرسن ایئر فیلڈ پر حملہ، کئی روسی ہیلی کاپٹر تباہ

روس اور یوکرین کے درمیان جنگ 21ویں روز بھی جاری ہے اور روسی فوجی مسلسل حملے کر رہے ہیں۔ یوکرین کے ساتھ جنگ ​​کے درمیان روس کے صدر ولادی میر پیوٹن نے بڑا اعلان کرتے ہوئے امریکی صدر جو بائیڈن اور کینیڈین وزیراعظم جسٹن ٹروڈو پر پابندی لگا دی ہے۔

یوکرین نے خرسن ایئر فیلڈ پر حملہ کر کے کئی روسی ہیلی کاپٹر تباہ کر دیے ہیں۔ آپ کو بتاتے چلیں کہ اس سے قبل روسی فوج نے خرسن ایئرفیلڈ پر قبضہ کیا تھا۔دوسری جانب کیف پر روس کا حملہ جاری ہے اور روس نے کیف میں ایک عمارت پر راکٹ حملہ کیا ہے جس کے بعد عمارت میں آگ لگ گئی۔

روسی فوجیوں نے کھارکیو میں شہریوں کی مدد کی اور 90 ٹن سے زیادہ امدادی سامان تقسیم کرنے کا دعویٰ کیا۔ روسی فوجی دستے عام شہریوں کی مدد کر رہے ہیں اور ڈیرگاچیوسکی ضلع میں امدادی کارروائیاں کر رہے ہیں۔یوکرین روس جنگ کا آج 21 واں دن ہے اور روسی فوجیوں نے کیف سمیت کئی شہروں پر قبضے کی لڑائی تیز کر دی ہے۔ دریں اثناء انکشاف ہوا ہے کہ اب تک 30 لاکھ سے زائد افراد یوکرین چھوڑ چکے ہیں۔

یوکرین کے 10 شہروں میں آج بڑے حملوں کی متعدد وارننگ جاری کی گئی ہیں۔ ان شہروں میں Cherkasy، Dnipro، Lviv، Kyiv، Ivano-Frankivsk، Odessa اور بہت سے دوسرے شامل ہیں۔ روسی حملوں کے پیش نظر تمام علاقوں میں سائرن سرگرم ہو گئے ہیں۔ روسی بارود کسی بھی وقت ان تمام علاقوں میں تباہی مچا سکتا ہے۔یوکرین اور روس کے درمیان دو روز سے جاری مذاکرات آج بھی جاری رہیں گے۔ مذاکرات میں دونوں ممالک کے نمائندے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے ملاقات کریں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں