رواں سال پہلے سے بھی زیادہ گرمی کی پیشگوئی

لاہور: (ویب ڈیسک) موسمیاتی تبدیلیوں سے موسم گرما شدید ترین رہنے کا امکان سامنے آگیا۔ مارچ اور اپریل میں ہی گرمی نےاپنا جوش دکھاناشروع کردیاہیں۔ مون سون میں معمول سے کم بارشیں ہونے کےامکانات بھی ظاہر کئے جا رہے ہیں۔

ملک میں ہرگزرتے دن کے ساتھ موسمیاتی تبدیلیوں کا عمل تیز ہوتا جا رہا ہے۔ مارچ اور اپریل میں وقت سے پہلے اور زیادہ پڑنے والی گرمی نےبتادیا ہے کہ موسم گرما کے باقی مہینوں کے دوران کیا صورت حال رہنے والی ہے. محکمہ موسمیات کے مطابق 1961 سے اب تک رواں برس مارچ کا مہینہ 9 واں بڑا خشک سالی کا مہینہ رہا ہے جس دوران اوسط درجہ حرارت تقریباً چار ڈگری زیادہ ریکارڈ کیا گیا۔ یہی صورت حال ماہ اپریل کے دوران بھی جاری رہنے امکان ہے۔ متوقع طور پر اِس سال مون سون کے دوران بھی معمول سے کم بارشیں ہوں گی، جس وجہ سے موسم گرما زیادہ شدید اور طویل ہوگا۔

محکمہ موسمیات کی کلائمیٹ چینج کے باعث ہی ملک میں گرمیوں کا اوسط دورانیہ 145 سے بڑھ کر 170 دنوں تک پہنچ چکا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں