پی ٹی آئی نے بیرونی سازش پر حکومتی کمیشن کے قیام کو مسترد کردیا

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف نے غیر ملکی سازش کے الزام کی تحقیقات کے لیے وفاقی حکومت کے مجوزہ انکوائری کمیشن کو مسترد کر دیا۔

پاکستان تحریک انصاف فواد چوہدری نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ آپ نے کہا ہم کمیشن بنائیں گے کہ اس امپورٹڈ حکومت کو لانے کے لیے غیر ملکی سازش نہیں ہوئی، ہم صرف وہ کمیشن قبول کریں گے جو آزاد عدلیہ کے تحت ہو اور کمیشن کی کارروائی براہ راست دکھائی جائے۔

فواد چوہدری نے مریم اورنگزیب کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ لگتا ہے آپ گھبرائی ہوئی ہیں، پہلے تو میرا مشورہ ہے گھبرانا نہیں ہے۔ آپ نے خود کبھی کونسلر کا الیکشن نہیں پڑا آپ ملک کے سب سے بڑے لیڈر کے بارے میں بات کر رہی ہوتی ہیں۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ آپ کے گھبرانے کا وقت کل کے جلسے کے بعد شروع ہوگا جب عمران خان اسلام آباد آنے کی کال دیں گے۔ جب سے یہ حکومت آئی 24 فیصد دہشتگردی میں اضافہ ہوا اور چینی شہریوں پر بھی حملے ہوئے۔

وفاقی حکومت کے بشریٰ بی بی کی قریبی دوست پر الزامات کے حوالے سے فواد چوہدری نے کہا بار بار فرح کو ساتھ ملوث کرنے کی بات کی جارہی ہے۔ ابھی تک آپ ان پر کوئی کیس کیوں نہیں بنا سکی، ایک ہی کیس ہے کہ ان کے اثاثے 40، 45 کروڑ سے بڑھ کر 80 کروڑ تک چلے گئے۔ آپ ان کو الزام ثابت کرنے کی بجائے روز پریس کانفرنس کر رہے ہیں۔

فواد چوہدری نے مزید کہا کہ پاکستان میں کسی قسم کی امپورٹڈ حکومت کو بیرون ملک کو اڈے دینے کی اجازت نہیں دیں گے۔ عمران خان کے ایبسلیوٹلی ناٹ کے بعد ان کو وزارت عظمی سے ہٹانے کی سازش شروع ہوئی۔ پاکستان کے اوپر بیرونی سازش کے تحت ایک امپورٹڈ حکومت مسلط کر دی گئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں