اسرائیلی فوج کی بربریت، خاتون صحافی کو قتل کردیا

اسرائیلی فورسز نے ظلم وبربریت کا بہیمانہ مظاہرہ کرتے ہوئے ممتاز خاتون صحافی کو قتل کر دیا۔ مقتولہ شیرین ابو عاقلہ کو سر میں گولی ماری گئی۔ انہوں نے دوران ڈیوٹی خالق حقیقی کے سپرد کردی

اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ وہ واقعے کی تحقیقات کر رہی ہے اور اس امکان پر بھی غور کرے گی کہ صحافی کو فلسطینی مسلح افراد کی گولی بھی لگا سکتی ہے۔

ایک صحافی نے ٹوئٹر پر لکھا: ’جہاں اسرائیلی حکام یہ دعویٰ کر رہے ہیں کہ الجزیرہ کی صحافی شیریں ابو عاقلہ فلسطینیوں کی گولی لگنے سے ہلاک ہوئیں، صحافی علی صمدی جو ان کے ساتھ تھے، نے مقامی میڈیا کو بتایا کہ فوج نے ان پر فائرنگ کی، اور ان کے قریب کوئی مسلح فلسطینی نہیں تھا۔‘

انڈیپینڈنٹ اردو میں شائع خبر کے مطابق شیرین ابو عاقلہ شہر جنین میں اسرائیلی فوج کے پناہ گزین کیمپوں پر مارے جانے والے چھاپوں کی کوریج کر رہی تھیں۔

خیال رہے کہ اسرائیل نے حالیہ ہفتوں کے دوران مقبوضہ مغربی کنارے میں روزانہ کی بنیاد پر چھاپہ مار کارروائیاں کی ہیں۔ اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ جنین شہر میں فورسز پر شدید فائرنگ اور دھماکا خیر مواد سے حملہ کیا گیا تھا۔

شیرین ابو عاقلہ الجزیرہ ٹی وی کے عربی چینل کی نامور صحافی تھیں۔ الجزیرہ ٹی وی اور فلسطینی وزارت صحت نے ان کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں