شہدا کے ورثا کو یقین دلاتا ہوں کبھی مایوس نہیں کرینگے، آرمی چیف

راولپنڈی: آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہنا ہے کہ ہمارے اصل ہیروز شہدا اور غازی ہیں، جو قومیں اپنے شہدا کو بھول جاتی ہیں وہ مٹ جاتی ہیں۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق جنرل ہیڈکوارٹر ہیڈکوارٹرز (جی ایچ کیو) میں شہدا کی فیملیز اور غازیوں میں اعزازات تقسیم کرنے کیلئے تقریب کا اہتمام کیا گیا۔ تقریب سے خطاب میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے شہیدوں اور ان کی فیملیز کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ مادر وطن پر قربان ہونے والے بہادر شہدوں کو سلام پیش کرتا ہوں، آج پھر مادر وطن پر قربان بہادر جوانوں کیلئے اکٹھے ہوئے ہیں۔

انہوں نے وطن کیلئے قربانی دینے والے شہیدوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان ان شہدا کی وجہ سے محفوظ ہے شہیدوں کی قربانیوں کی وجہ سے ملک میں امن ہے، ہمارے اصل ہیروز شہدا اور غازی ہیں، افسروں، جوانوں کی قربانی کی وجہ سے پاکستان میں ہم آرام سے سوتے ہیں، جو قومیں اپنے شہدا کو بھول جاتی ہیں وہ مٹ جاتی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ رہتی دنیا تک شہدا کا نام چمکتا رہے گا، شہید نے دنیا میں بھی اور آخرت میں بھی اپنانام کمالیا، شہید کے خون کا قطرہ گرنے سے پہلے ہی اس کی بخشش ہوجاتی ہے، شہید اپنے ورثا کیلئے بھی جنت کے راستے کھول دیتا ہے۔

جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ کوئی قوم، کوئی ملک اپنے شہدا کی قربانی کا صلہ پیش نہیں کرسکتی، کوئی مادی قوت، دولت، پیسہ شہید کا نعم البدل نہیں ہوسکتی، ہماری ذمہ داری ہے کہ ہم شہدا کے ورثا کی دیکھ بھال کریں، یہ ملک آپ لوگوں کی قربانیوں کی وجہ سے زندہ ہے، یہ فوج ہی ہے جو صبح سے شام تک پاکستان کے ہر چپہ کی حفاظت کرتی ہے۔

آرمی چیف نے کہا کہ سیلاب، طوفان، زلزلہ یا وبا، ہر جگہ فوج مدد کیلئے آپ کو ملے گی، کوئی حادثہ ہو فوج بتائے بغیر وہاں پہنچ جاتی ہے، آج کل بلوچستان میں ہیضہ پھیلا ہوا ہے وہاں پر پانی کی کمی ہے، میرے بتائے بغیر وہاں پر فوج پہنچ کر لوگوں کی خدمت کررہی ہے، ہم اپنی اس خدمت پر، اس کام پر فخر محسوس کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ شہدا کے ورثا کو یقین دلاتا ہوں انشااللہ آپ کو کبھی مایوس نہیں کرینگے، دنیا کہتی ہے یہ واحد فوج ہے جس نے دہشت گردی کا خاتمہ کیا ہے، دنیا پوچھتی ہے دہشت گردی کو کیسے ختم کیا جبکہ باقی ملک فیل ہوگئے۔

آرمی چیف نے کہا کہ ہمارے پاس ایسی مائیں ہیں جو اپنے لخت جگرقربان کرتی ہیں، ایسی بہنیں جو اپنے شوہر اور ایسے بچے ہیں جو والد قربان کرتے ہیں، جب تک ایسی مائیں بہنیں ہیں کوئی پاکستان کو نقصان نہیں پہنچا سکتا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں