امریکی کمپنی میٹا کو تاریخ میں پہلی بار کاروبار میں نقصان

فیس بک کی پیرنٹ کمپنی میٹا نے اعلان کیا ہے کہ عالمی اقتصادی بحران کی وجہ سے اسے تاریخ میں پہلی بار کاروبار میں نقصان کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ بڑھتے ہوئے معاشی خدشات کے درمیان اشتہارات کی فروخت سکڑ گئی۔ اس لئے میٹا کمپنی دوسری سہ ماہی کے لیے آمدنی کی توقعات سے محروم رہی۔

خیال رہے کہ اپریل تا جون کی سہ ماہی میں میٹا نے 28 اعشاریہ 8 بلین ڈالر آمدنی کی اطلاع دی تھی جو پچھلے سال کی اسی مدت کے مقابلے میں 1 فیصد کم ہے۔ میٹا نے فی حصص 2 اعشاریہ 46 ڈالر فی شیئر کی کمائی کی گئی حالانکہ معاشی ماہرین نے اس کیلئے فی حصص 2 اعشاریہ 56 ڈالر کی توقع کی تھی۔

میٹا کی پہلی بار آمدنی میں کمی ان چیلنجوں کو نمایاں کرتی ہے جن کا سامنا سوشل میڈیا جائنٹ کے اشتہاری کاروبار کو ہوتا ہے کیونکہ یہ معاشی سست روی کا شکار ہے۔ مشتہرین بڑھتے ہوئے خدشات کے درمیان پیچھے ہٹ رہے ہیں کہ عالمی معیشت کساد بازاری میں داخل ہو سکتی ہے۔

صورتحال کے پیش نظر میٹا نے کمپنی کے اخراجات کو کم کر دیا ہے۔ آمدنی کے چیلنجوں کو پورا کرنے کے لئے کچھ ملازمتیں منجمد کر دی گئی ہیں۔ تیسری سہ ماہی کے لئے کمپنی کی توقعات بھی تجزیہ کاروں کی توقع سے کم تھیں۔ میٹا نے کہا کہ اس کی توقع ہے کہ آمدنی 26 بلین ڈالر سے 28 اعشاریہ 5 بلین ڈالر کی حد میں ہوگی، جو کہ 30 اعشاریہ 5 بلین کی توقعات سے کم ہے۔

میٹا کے سی ای او مارک زکربرگ نے تجزیہ کاروں کے ساتھ ایک کال میں کہا، “ایسا لگتا ہے کہ ہم ایک معاشی بدحالی میں داخل ہو گئے ہیں جس کا ڈیجیٹل اشتہارات کے کاروبار پر وسیع اثر پڑے گا۔” “یہ پیش گوئی کرنا ہمیشہ مشکل ہوتا ہے کہ یہ چکر کتنے گہرے یا کتنے لمبے ہوں گے، لیکن میں یہ کہوں گا کہ صورتحال ایک چوتھائی پہلے کی نسبت بدتر دکھائی دیتی ہے۔”

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں