ایسی جسمانی حرکات جو دوسروں پر برا اثر چھوڑتی ہیں

سائنسی مطالعات نے ثابت کیا ہے کہ جسمانی زبان کسی فرد کی شخصیت کی خصوصیات کی عکاسی کرتی ہے۔

باڈی لینگویج ان پیغامات اور خیالات پر توجہ مرکوز کرنے اور واضح کرنے کا ایک مؤثر ذریعہ ہیں جو آپ دوسروں تک پہنچانا چاہتے ہیں۔ جسمانی اشارے بھی سب سے طاقتور غیر زبانی ٹولز ہیں جسے ایک شخص اعتماد، ذہنیت اور ثقافت کی سطحوں کو بتانے کے لیے استعمال کر سکتا ہے۔

سائنسی مطالعات نے ثابت کیا ہے کہ جسمانی زبان کسی فرد کی شخصیت کی خصوصیات کی عکاسی کرتی ہے۔ لہٰذا، وہ لوگ جو اپنی شخصیت کی تعمیر کے لیے جسمانی زبان اور اشاروں کا استعمال سمجھ سکتے ہیں اور ان سے رشتہ جوڑ سکتے ہیں، وہ جانتے ہیں کہ اگر کوئی شخص ایک موثر شخصیت حاصل کرنا چاہتا ہے، تو اسے جسمانی زبان اور اشاروں کو بہتر کرنے کی ضرورت ہوگی۔ جیسا کہ درست لہجہ، اشارے، جسمانی حرکات، چہرے کے تاثرات اور آنکھوں کا رابطہ مضبوط شخصیت کی کنجی ہیں اور دوسروں پر پہلا مثبت تاثر بنا سکتے ہیں۔

ماہرین 5 باڈی لینگویج اشاروں سے گریز کرنے کا مشورہ دیتے ہیں جو برا تاثر دیتے ہیں۔

1: بازوؤں کو پیٹھ کے پیچھے رکھنا

اگر آپ کسی سے بات کرتے ہوئے اپنے بازو اپنی پیٹھ کے پیچھے رکھتے ہیں، تو آپ غیر زبانی انداز میں برا تاثر پیدا کر سکتے ہیں، کیونکہ آپ بات چیت کو منقطع کرنے کی کوشش کر رہے ہوں گے یا یہ تاثر دیں گے کہ آپ ایک متکبر انسان ہیں۔ یہ پوزیشن اس بات کی بھی نشاندہی کر سکتی ہے کہ آپ دوسرے شخص کی باتوں پر بھروسہ نہیں کرتے۔

ماہرین نفسیات کا کہنا ہے کہ بات کرتے وقت ہاتھ اپنی پیٹھ کے پیچھے رکھنا کسی کو یہ بتانے کا ایک طریقہ ہے کہ “آپ کو ان کے بارے میں یقین نہیں ہے۔”۔ اگر آپ اپنی پیٹھ کے پیچھے بازو پکڑے ہوئے ہیں تو یہ مایوسی، غصہ، گھبراہٹ، اعتماد کی کمی اور یہاں تک کہ عدم تحفظ کی علامت ہے یا کم از کم یہ کہ آپ اس میں کچھ سکون تلاش کر رہے ہیں۔

2: بات کرتے وقت چہرے کو چھونا

اگر آپ کسی سے بات کرتے ہوئے اپنے چہرے کو چھوتے ہیں تو آپ غیر زبانی انداز میں ان پر برا اثر ڈال سکتے ہیں۔ گفتگو یا ملاقات کے درمیان اپنے چہرے کو چھونا آپ کی گھبراہٹ، بے چینی، کنٹرول کی کمی اور اعتماد کی کمی کے آثار ہیں۔ اس سے یہ بھی ظاہر ہوتا ہے کہ آپ مسلسل کسی ایسی چیز کے بارے میں سوچ رہے ہیں جس سے پتہ چلتا ہے کہ آپ کا دماغ جاری گفتگو کے دوران بھٹک رہا ہے۔ اگرچہ دوسرے کے چہرے کو چھونا قربت اور پیار کی علامت ہے، لیکن اپنے چہرے کو چھونا آپ کے حقیقی جذبات کا اظہار ہے۔

3: ہاتھوں کی انگلیوں کو گرہ لگانا

اگر آپ کسی سے بات کرتے ہوئے اپنے ہاتھ یا انگلیوں کو آپس میں جوڑتے ہیں، تو آپ ایک برا تاثر بنا رہے ہیں۔ بات چیت کے دوران اپنے ہاتھوں کو پکڑنا یا انگلیوں کو آپس میں ملانا یہ تاثر دیتا ہے کہ آپ بے چین، گھبراہٹ، ہچکچاہٹ، تناؤ اور اعتماد کی کمی کا شکار ہیں۔ اگر آپ کچھ پیش کرتے یا بات کرتے ہوئے اپنے ہاتھ پکڑتے یا رگڑتے رہتے ہیں تو اس کا مطلب یہ ہو سکتا ہے کہ آپ میں تیاری کی کمی ہے اور یہ مایوسی، تناؤ اور اضطراب کی علامت ہے۔

4: انگلی سے اشارہ کرنا

بہت سے لوگ اس اشارے کو اپنے بیان پر زور دینے یا کسی چیز کی نشاندہی کرنے کے لیے استعمال کرتے ہیں۔ لیکن یہ جاننا کافی ہے کہ یہ ایک ایسا اشارہ ہے جو بدتمیزی اور جارحانہ دکھائی دیتا ہے، اس لیے ماہرین اس سے پرہیز کرنے کا مشورہ دیتے ہیں۔

5: پاؤں اور ٹانگوں کی پوزیشن

اگر آپ کسی سے بات کرتے ہوئے اپنے پاؤں کھینچتے ہیں تو اس سے برا تاثر بن سکتا ہے اور یہ ظاہر ہوگا کہ آپ جو کہنا چاہتے ہیں اس پر آپ میں اعتماد کی کمی ہے۔ اور اگر آپ ایک ٹانگ کو دوسری ٹانگ پر کراس کرتے ہیں تو یہ اچھی پوزیشن نہیں ہے، کیونکہ یہ آپ کی خود اعتمادی ختم کر دیتا ہے اور آپ کے الفاظ کو بھی کم طاقتور یا موثر بنا دیتا ہے۔ بات کرتے وقت ایک پاؤں کو دوسرے کے اوپر رکھنے سے ایسا محسوس ہو سکتا ہے کہ آپ پیچھے ہٹ رہے ہیں یا خوفزدہ یا فکر مند محسوس کر رہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں